دنیا کا سب سے مہنگا پنیر کس جانور کے دودھ سے بنایا جاتا ہے، لاکھوں روپے فی کلو فروخت ہونے والے پنیر کے بارے میں دلچسپ معلومات

اگر آپ پنیرکے دیوانے ہیں اور آپ کو لگتا ہے کہ آپ نے دنیا کے سارے پنیر چکھ لئے ہیں تو یقین جانئے آپ غلط ہیں۔آپ نے گائے اور بکری کے دودھ سے بنا پنیر تو سنا ہوگا، اور شید ان کی قیمت سے بھی واقف ہوں۔ لیکن کیا آپ جانتے ہیں دنیا کا سب سے مہنگا پنیر کس جانور کے دودھ سے تیار کیا جاتا ہے؟دنیا کا سب سے مہنگا پنیر گدھی کے دودھ سے تیار کیا جاتا ہے، جسے ‘پیول’ کہتے ہیں۔ اس کی قیمت 880 یورو

یعنی 1 لاکھ 10 ہزار سات سو اڑتالیس روپے فی کلو ہے۔ جبکہ مارکیٹ میں عام شیڈار پنیر 10 یورو فی کلو کے حساب سے دستیاب ہے۔لیکن یہ اتنا مہنگا کیوں ہے؟ایک کلو پنیر بنانے کیلئے 25 کلو گدھی کا دودھ استعمال ہوتا ہے۔ جبکہ ایک کلو گدھی کے دودھ کی قیمت 40 یورو ہے۔پیول نامی یہ گدھی کے دودھ کا پنیر سربیا میں موجود سلوبوڈن سنک نامی شخص کے فارم پر تیار کیا جاتا ہے۔ سلوبوڈن کے پاس اس کام کیلئے 300 گدھے موجود ہیں۔لیکن ایک وقت میں صرف 20 گدھے ہی دودھ فراہم کر پاتے ہیں۔ سلوبوڈن کا کہنا ہے کہ گدھی کے دودھ میں دودھ کو دہی کی طرح گاڑھا کرنے والا مادہ کیسین اتنا موجود نہیں ہوتا۔ اس لئے دودھ کو پنیر میں تبدیل کرنے کیلئ ان کے پاس اپنا ایک خفیہ طریقہ بھی ہے۔سلوبوڈن نے بتایا کہ گدھی کے دودھ میں پروٹین، کیلشئیم، اومیگا 3 فیٹی ایسڈز پائے جاتے ہیں دل کے امراض سے بچاؤ کیلئے بہت زیادہ مددگار ثابت ہوتے ہیں۔تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ گدھی کے دودھ میں گائے کے مقابلے وٹامن سی کی مقدار زیادہ ہوتی ہے اور اس میں اینٹی الرجک خصوصیات بھی پائی جاتی ہیں۔