بیرسٹرسلطان محمود چوہدری کی کال پرپورے آزاد کشمیر میں نواز شریف کے پاکستان مخالف بیان کے خلاف احتجاجی مظاہرے

مظفر آباد، باغ، میرپور، کوٹلی، سدھنوتی،راولاکوٹ،نیلم، بھمبر ( پی کے نیوز) نواز شریف کے پاکستان مخالف بیان کے خلاف آزاد کشمیر کے سابق وزیر اعظم و پی ٹی آئی کشمیر کے صدربیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی کال پرپورے آزاد کشمیر میں دارالحکومت مظفر آباد سمیت تمام ضلع ہیڈکورٹرز باغ، میرپور، کوٹلی، سدھنوتی،راولاکوٹ،نیلم، بھمبر میںپی ٹی آئی کشمیر کے زیر اہتمام زبردست احتجاجی

مظاہرے ۔اس موقع پر مظاہرین نے مودی کا جو یار ہے و ہ غدار ہے غدار ہے، نواز مودی گٹھ جوڑ ہائے ہائے، تحریک آزادیء کشمیر زندہ باد، کشمیر کی آن کشمیر کی شان بیرسٹر سلطان ، بیرسٹر سلطان جیسے فلک شگاف نعرے لگاتے رہے ۔ اس موقع پر مظاہرین نے انہیں نعروں پر درج پلے کارڈز اور بینرز بھی اٹھا رکھے تھے۔ اس موقع پر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے خود آزاد کشمیر کے دارالحکومت مظفر آباد میں زبردست احتجاجی مظاہرے کی قیادت کی۔اس موقع پراحتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ نواز شریف کے بیان نے ہمارے دشمنوں کے لئے جواز پیدا کر دیا ہے کہ وہ آزاد کشمیر میں سرجیکل اسٹرائیکس کر سکیں۔ایسے وقت میں جبکہ مقبوضہ کشمیر میں کشمیری عوام اپنی جانوں کے نظرانے پیش کر رہے ہیں اور یہاں تک کہ خواتین اپنی عصمتوں کی قربانی دے رہی ہیں۔نواز شریف کا بیان مضحکہ خیز ہے ۔حالانکہ مقبوضہ کشمیر میںبھارت ایک طویل عرصے سے ریاستی دہشتگردی کا مرتکب ہو رہا ہے۔نواز شریف کے بیان نے یہ بھی ثابت کر دیا ہے کہ مودی نواز گٹھ جور نے آزاد کشمیر کے عوام کو مینڈیٹ چرایا۔کیونکہ نواز شریف آزاد کشمیر میں ایک ایسی حکومت قائم کرنا چاہتے تھے جو کہ تقسیم کشمیر کی راہ ہموار کر سکے۔ کیونکہ مودی اور نواز شریف جانتے تھے کہ میرے اسمبلی میں ہونے سے وہ ایسا نہیں کر سکتے۔ لیکن میں مودی اور نواز شریف کوآج یہاں مظفر آباد سے چیلنج کرتا ہوں کہ میں اسمبلی

میں ہوں یا نہ ہوں انکی سازشیں کامیاب نہیں ہونے دونگا۔میں نے مودی کا دنیا میں ہر جگہ پیچھا کیا اور اسکے رنگین چہرے سے نقاب اٹھار کر دنیا کو اسکا مکروہ چہرہ دکھایا۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے نواز شریف کے پاکستان مخالف بیان پر ایک آج یہاں مظفرآباد میں آزادی چوک پر ایک زبردست احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ نواز شریف نے اپنے آقائوں کے کہنے پر یہ بیان دیا ہے۔اب وقت آگیا ہے کہ آزاد کشمیر میں نواز شریف

کی ٹھونسی گئی دھاندلی کی پیداوارکٹھ پتلی حکومت کوچلتا کیا جائے۔ اب نواز شریف کی آزاد کشمیر سے باقیات کے دن گنے جا چکے ہیں۔ لہذا پی ٹی آئی کے کارکن الیکشن کی تیاریاں کریں۔پی ٹی آئی کشمیر کی ممبر شپ مہم کو جلد مکمل کریں تاکہ تنظیم سازی کا مرحلہ بھی مکمل کیا جا سکے۔اس دفعہ تنظیم سازی پسند نہ پسند یا سفارش کی بنیاد پر نہیں ہو گی بلکہ جو لوگ پارٹی میں متحرک ہیں انہیں عہدے ملیں گے۔میں یقین دلاتا ہوں کہ پارٹی میں کام کرنے والوں کو ہی آگے لایا جائے گا۔اس

موقع پرمظفر آباد میں ہونے والے مظاہرے میں سابق وزیر خواجہ فاروق احمد، سردار گل خنداں،پروفیسر تقدیس گیلانی، گلزار فاطمہ، جواد گیلانی،راجہ شیراز، شاہدہ نقوی،ذیشان حیدر کاظمی، عدیل میر، منیر سلہریا اور دیگر شامل تھے۔دریں اثناء بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی کال پر باغ میں مظاہرے میں سردار طاہر اکبر، اشفاق گردیزی، بشارت بادشاہ، صداقت حیات، عاشر شجاع دیگر شریک تھے جبکہ راولاکوٹ میں ہونے والے مظاہرے میں سردار نیر ایوب، سردار نثار، طاہر شاہین، سردار

تسلیم، فیصل الطاف، سردار راشد،سردار ایاز اور دیگرشریک تھے۔ جبکہ سدھنوتی میں ہونے والے مظاہرے میں سردار عتیق سخاوت سدوزئی اوردیگر شریک ہوئے جبکہ میرپور میں ہونے والے احتجاجی مظاہر میں سابق ممبر اسمبلی چوہدری ارشد، چوہدری صدیق، چوہدری منشاء، چوہدری امجد محمود، عنصر صارم، حاجی جاوید اور دیگر شریک ہوئے۔ جبکہ کوٹلی میں ہونے والے مظاہرے میں سابق مشیر چوہدری اخلاق، سابق ممبر کشمیر کونسل چوہدری محبوب، انصر ابدالی،عطاء محی

الدین قادری، سردار رزاق، چوہدری رزاق ایڈووکیٹ، ملک نثار،ساجد چوہدری ایڈووکیٹ ، ملک عادل اور دیگر شریک تھے۔ جبکہ بھمبر میں ہونے والے مظاہرے میں ڈاکٹر انعام الحق، چوہدری ریاض،عبدالرئوف کاشر اور دیگر شریک تھے۔