شکایت لگانا جرم بن گیا، ڈی جی ایف آئی اے نے اپنے ماتحت افسروں کیساتھ کیا سلوک کرڈالا، وزیراعظم کا شکایات پورٹل صرف دعوئوں تک ہی محدود رہ گیا، افسوسناک انکشاف

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)وزیراعظم عمران خان کا شکایت سیل پاکستان سٹیزن پورٹل صرف دعووں کی حد تک محدود ہو کر رہ گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے شکایت سیل میں شکایت کنندہ شہری اپنی اپنی شکایات پر کارروائیوں کے منتظر ہیں۔ شکایت کنندہ کی جانب سے ڈی جی ایف آئی اے کے خلاف اپنے ماتحت افسر کو ہراساں کرنے کی ایک اور شکایت وزیر اعظم کے شکایت سیل پی سی پی کو ارسال کردی گئی ہے جو کارروائی کی منتظر ہے۔تفصیلات کے مطابق اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایف آئی اے رضوان اسلم کی جانب سے دوسری مرتبہ شکایت بھجوائی گئی ، وزیر اعظم کا شکایت سیل پاکستان سیٹیزن پورٹل بھی مطلوبہ نتائج ڈیلیور کرنے کی بجائے صرف دعوں

کی حد تک محدود ہو گیا ہے۔ جبکہ شکایت کنندگان اپنی شکایات پر کارروائیوں کے منتظر ہیں۔وزیر اعظم کے شکایت مرکز میں موجود افسر متاثرین کو دوبارہ شکایت بھجوانے کے مشورے دینے لگے۔ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن کے خلاف اپنے ماتحت افسر کوہراساں کرنے کی ایک اور شکایت وزیر اعظم کے شکایت سیل پی سی پی کو ارسال کردی گئی۔ اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایف آئی اے رضوان اسلم کی جانب سے دوسری مرتبہ شکایت بھجوائی گئی ، پہلی شکا یت 29 اکتوبرکو ڈی جی کے ناروا رویے کے خلاف کی تو وہ انتقامی کارروائی پر اُتر آئے۔ اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایف آئی اے کا کہنا تھا کہ گذشتہ کئی روز سے ایف آئی اے کے متعدد افسر فون اور میسجز کرکے فیملی کو ہراساں کررہے ہیں۔اب بیوی اور سالے کو انکوائری کے بہانے ہراساں کرنے کے لئے ایف آئی اے ہیڈ کواٹر طلب کیا جارہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بھائی کا شناختی کارڈ اور دستاویزات طلب کی جا رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ ڈی جی کی جانب سے ایسے رویے پر سخت ذہنی اذیت سے دوچار ہوں۔ جبکہ قائم کردہ شکایت سیل کے حکام کا متاثرہ افسر کو کہنا تھا کہ شکایت وزیراعظم عمران خان کوبجھوادی گئی ہےجس کا جلد ازالہ کیا جائے گا۔ واضح رہےکہ وزیراعظم عمران خان نے گذشتہ ماہ ‘پاکستان سٹیزن پورٹل’ کا افتتاح کیا تھا۔