وزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف کی ملاقات، کن معاملات پر بات چیت ہوئی، اندر کی کہانی سامنے آگئی

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) وزیراعظم عمران خان سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے ملاقات کی۔ تفصیلات کے مطابق ملاقات میں ملک کی داخلی اور خارجہ سکیورٹی سمیت خطے کی صورتحال پر بات کی گئی۔ وزیراعظم عمران خان سے ملاقات میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے پاک فووج کی پیشہ ورانہ تیاریوں سے وزیراعظم کو آگاہ کیا جس پر عمران خان نے ان کو خوب سراہا۔وزیراعظم اور آرمی چیف کی ملاقات میں افغانستان کی سکیورٹی صورتحال اور مفاہمتی پالیسی پر بھی بات چیت کی گئی۔ ملاقات میں باہمی دلچسپی کے دیگر امور بھی زیر غور آئے جبکہ ملک بھر میں دہشتگردوں کے خلاف جاری آپریشنز اور ملک کمی مجموعی سکیورٹی صورتحال پر بریفنگ بھی دی

گئی۔ وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان خطے میں امن کے قیام کے لیے اپنا کردار ادا کرتا رہے گا۔افغانستان میں امن کے قیام کے لیے تمام اقدامات کی حمایت کرتے ہیں۔ واضح رہے کہ امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد پاکستان میں موجود ہیں اور انہوں نے کچھ دیر قبل وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی تھی۔ ملاقات میں افغان مفاہمتی عمل اور طالبان سے مذاکرات سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے زلمے خلیل زاد نے کہا کہ ہم افغانستان میں امن کی بحالی کے لیے پاکستان کے ساتھ چلنا چاہتے ہیں۔امریکہ افغانستان کا سیاسی حل چاہتا ہے۔ وزیر اعظم عمران خان نے ملاقات کے دوران کہا کہ پاکستان نے ہمیشہ افغانستان میں سیاسی حل کو ہی اولین ترجیح سمجھا ہے۔ افغانستان میں مصالحت ہی قیام امن کے لیے واحد حل ہے، پاکستان خطے میں امن کے لیے ہمیشہ کوشاں رہا ہے، اس سلسلے میں امریکی صدر کا افغانستان میں امن کے لیے خط خوش آئند ہے۔ اس موقع پر وزیر اعظم عمران خان نے دو طرفہ رابطوں پر خصوصی زور دیتے ہوئے کہا کہ تجارت، سرمایہ کاری، تعلیم اور صحت میں امریکی تعاون کی ضرورت ہے۔یاد رہے کہ امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد گذشتہ روز وفاقی دارالحکومت اسلام آباد پہنچے تھے۔ امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد پاکستان کے سول و عسکری حکام سے ملاقاتیں کریں گے۔ ان ملاقاتوں میں امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد طالبان سے امریکی مذاکرات پر سیاسی وعسکری قیادت کو اعتماد میں لیں گے۔ امریکی نمائندہ خصوصی برائے افغان مفاہمتی عمل زلمے خلیل زاد 2 سے 20 دسمبر تک پاکستان سمیت افغانستان، روس، ترکمانستان، ازبکستان، بیلجیئم، متحدہ عرب امارات اور قطر کا دورہ کریں گے۔