یہی ہے عمران خان کا نیا پاکستان، نازیبا بیان پر ایک وزیر کو عہدے سے ہٹا دیا گیا، راجہ ضیا قدیر

یہی ہے عمران خان کا نیا پاکستان، نازیبا بیان پر ایک وزیر کو عہدے سے ہٹا دیا گیا، راجہ ضیا قدیر اسلام آباد(پی کے نیوز) تحریک انصاف کے رہنما راجہ ضیا قدیر کہا ہے کہ ہندووں کے حوالے سے نازیبا بیان بازی پر پنجاب کے وزیر اطلاعات کو عہدے سے ہٹانا اچھا فیصلہ ہے، عمران خان نے فوری ایکشن لے کر ثابت کیا ہے کہ وہ اپنے کسی بھی وزیر کی جانب سے اس طرح کی گفتگو برداشت نہیں کرتے، اور نہ ہی وہ کسی وزیر یا اعلی عہدیدار کو یہ اجازت دیں گے کہ وہ کسی کے مذہب یا ذات کے خلاف جملے کسے، ان کا کہنا تھا کہ اگر ہم نے پاکستان کو آگے لے کرجانا ہے تو دوسروں کے جذبات سے کھیلنے سے باز رہنا ہوگا، ان کا کہنا تھا کہ پنجاب کے اہم وزیر کو ہٹانا احتساب کی اعلی مثال ہے، قومی اور عالمی سطح پر بھی اس فیصلے کو اچھے انداز سے دیکھا جارہا ہے اور مخالفین بھی اس فیصلے کی تعریف کرنے پر مجبور ہوئے ہیں، اس

فیصلے سے پاکستان کا ایک معتدل تاثر قائم ہوگا، ان کا کہنا تھا کہ بھارت اور دیگر ممالک کو بھی اس طرح کے اقدامات اٹھانے چاہیں،بھارت میں وزرا آئے روز مسلمانوں کے خلاف زہر اگلتے نظر آتے ہیں، لیکن ان کے خلاف کوئی کاروائی نہیں ہوتی، ان کا کہنا تھا کہ وزرا اور اعلی عہدوں پر فائز لوگوں کو کسی طرح کی فضول بیان بازی سے گریز کرنا چاہیے، لوگ انہیں فالو کرتے ہیں انہیں الفاظ سوچ سمجھ کر استعمال کرنے چاہیں، ان کا کہنا تھا کہ فیاض الحسن چوہان نے اس سے قبل کشمیریوں کے بارے میں بھی نازیبا زبان استعمال کی ہے، جس پر کشمیری قوم سراپا احتجاج ہے، پہلی بار اپنی غلطی تسلیم کرنے کے بعد فیاض الحسن چوہان نے دوسری بار پھر کشمیریوں کیخلاف نازیبا گفتگو کی، ان کا کہنا تھا کہ ایسی گفتگو کسی وزیر کو زیب نہیں دیتی، ان کا کہنا تھا کہ یہی نیا پاکستان ہے، یہاں اگر کوئی وزیر نازیبا زبان استعمال کرے تو اسے گھر جانا پڑتا ہے۔