یورپی پارلیمنٹ کے انتخابات میں یورپ میں مقیم پاکستانی و کشمیری مسئلہ کشمیر پر ہمارے موقف کی حمایت کرنے والے امیدواروں کو ووٹ دیں، بیرسٹر سلطان‎

اسلام آباد( نمائندہ خصوصی ) آزاد کشمیر کے سابق وزیراعظم و پی ٹی آئی کشمیر کے صدر بیرسٹر سلطان محمودچوہدری نے کہا ہے کہ 26 مئی کو یورپی پارلیمنٹ کے ہونے والے انتخابات میں یورپ میں مقیم کشمیری و پاکستانی ایسے امیدواروں کو ووٹ دیں جو کہ مسئلہ کشمیر پر ہمارے موقف کی حمایت کریں۔جو یورپی پارلیمنٹ کی آل پارٹیزکشمیر کمیٹی کے رکن رہے ہیں۔جو ہمارے لئے کشمیر پر مظاہروں کی کوششوں میں شریک ہوتے ہیںاور جو کھل کر مسئلہ کشمیر پر ہمارے موقف کی حمایت کرتے ہیں۔اسی طرح پہلے بھی جو کشمیری و پاکستانی نژاد ممبر یورپی پارلیمنٹ رہیں ہیں۔ ہم انکی کاوشوں پر بھی انہیں خراج تحسین پیش کرتے ہیں کہ انھوں نے مسئلہ کشمیر کو یورپی پارلیمنٹ

میں جاندار انداز میں اٹھایااور مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اہم کردار ادا کرتے رہے ہیں۔ اب وقت کی اہم ضرورت ہے کہ ایسے امیدواروں کو یورپی پارلیمنٹ میں ووٹ دیکر کامیاب بنایا جائے جو مقبوضہ کشمیر میں جاری مظالم کو رکوانے کے لئے بھارت پر دبائو ڈال سکیںاور آئند پارلیمنٹ میں کشمیر کمیٹی کے رکن بنیں اور مسئلہ کشمیر پر ہمارے موقف کی حمایت کریں۔ میں نے اس سلسلے میں یورپ میں مختلف جگہوں پر کشمیری و پاکستانی کمیونٹی سے کہا ہے کہ وہ اس سلسلے میں متحرک ہو جائیں۔ اگرچہ برطانیہ بریگزیٹ کی وجہ سے شاید یورپی یونین کا حصہ نہ رہے اسلئے ہمیں برطانیہ کے علاوہ یورپ کے دیگر ممالک میں بھی اس سلسلے میں اپنی کوششیں تیز کرنی چاہیں۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے آج یہاں پی ٹی آئی کشمیر کے مرکزی سیکریٹیرٹ میں پی ٹی آئی کشمیر یورپ کے سابق صدر زاہد ہاشمی سے ایک ملاقات میں کیا۔ اس موقع پر پی ٹی آئی کشمیر کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات سردار امتیاز خان بھی موجود تھے۔ بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا کہ میں خود بھی جلد یورپ آکر انتخابی مہم چلائونگا اور یورپی یونین چونکہ ایک بڑا اداررہ ہے اس کا انسانی حقوق پر بھی اچھا ٹریک ریکارڈ ہے۔ ویسے بھی کچھ عرصہ قبل یورپی پارلیمنٹ نے مسئلہ کشمیر، مقبوضہ کشمیر میں جاری مظالم اوروہاںگمنام قبروں کی دریافت پر ایماء نکلسن رپورٹ جاری کی تھی اسی طرح یورپی ارلیمنٹ وقتاً وفوقتاً مقبوضہ کشمیر میں مظالم پر قراردادیں پاس کرتی رہتی ہے جس میں بھارت کی طرف سے مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالی کی مزمت کی جاتی رہی ہے۔لہذا میں یورپ میں مقیم کشمیریوں اور پاکستانیوں سے اپیل کرونگا کہ وہ یورپی پارلیمنٹ کے انتخابات میں ایسے امیدواروں کو ووٹ دیکر کامیاب کرائیں جو کہ انسانی حقوق پر یقین رکھتے ہوں اور مسئلہ کشمیر پر ہمارے موقف کی حمایت کریں۔