امریکہ ،ایران جنگ!!عین وقت پر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایسا فیصلہ کرلیا کہ پوری دنیا حیران رہ گئی

واشنگٹن(نیوز ڈیسک) امریکا، ایران جنگ کا خطرہ ٹل گیا، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا اپنی فوج مشرق وسطی نہ بھیجنے کا اعلان۔ تفصیلات کے مطابق کئی روز سے جاری امریکا ایران کشیدگی کے بعد خبریں سامنے آ رہی تھیں کہ امریکا نے اپنی فوج کو جنگ کیلئے تیار رہنے کا حکم دیا ہے۔ ایک امریکی اخبار کی رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا کہ امریکہ نے ایران سے مقابلہ کرنے کے لیے مشرق وسطیٰ میں ایک لاکھ 20 ہرزار فوجیوں کو بھیجنے کا منصوبہ بنا لیا ہے۔امریکی اخبار نے دعویٰ کیا کہ نیا امریکی منصوبہ قائم مقام سیکریٹری دفاع پیٹرک شین ہین نے تیار کیا ہے اور اس پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سینئر سیکیورٹی افسران کے ساتھ مشاورت بھی کی ہے۔ امریکی سکریٹری دفاع کی جانب سے تیارکردہ منصوبے کے مطابق اگرایران امریکی افواج پر حملہ کرتا ہے اور یا وہ اپنے جوہری ہتھیاروں پر کام کی رفتار بڑھاتا ہے تو ایک لاکھ 20 ہزار

امریکی فوجیوں کو وسطی ایشیا بھیجا جا سکتا ہے۔امریکی اخبار نے اس خبرنے جہاں دنیا بھر کی توجہ اپنی جانب مبذول کی اور ہلچل مچائی، وہیں خود امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو بھی ہنگامی طور پر بیان جاری کرنا پڑ گیا۔ امریکی صدر ڈولنڈر ٹرمپ نے اپنے جاری کردہ تازہ ترین بیان میں امریکی اخبار کی رپورٹ کو یکسر مسترد کردیا ہے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا ہے کہ ایک لاکھ سے زائد فوج مشرق وسطیٰ بھیجنے کا کوئی منصوبہ بنایا ہی نہیں گیا۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس میں ذرائع ابلاغ سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ یہ جھوٹی خبر ہے۔ ۔امریکی صدر کا کہنا تھا کہ ہم نے جنگ کے حوالے سے کوئی منصوبے نہیں بنائے ہیں۔ تاہم اس موقع پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دھمکی دی کہ اگر ایران نے کسی قسم کی جارحیت دکھائی، تو اس صورت میں امریکا 1 لاکھ سے کہیں زیادہ فوج میدان میں اتار دے گا۔