حکومت کاعید پر پٹرول بم گرانے کا فیصلہ،قیمت میں5،6روپے نہیں بلکہ کتنا اضافہ کرنے کامنصوبہ بنالیا،جان کر آپ کی آنکھیں پھٹی کی پھٹی رہ جائینگی

لاہور(نیوز ڈیسک)عید پر پیٹرول کی قیمت میں ہوشربا اضافے کی سمری تیار کر لی گئی، اگلے ماہ سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 10 روپے فی لیٹر تک اضافے کا امکان، حتمی فیصلہ وزارت خزانہ کی منظوری کے بعد ہوگا، ڈالر اور عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں اضافے کے باعث پیٹرول کی قیمت میں اضافہ متوقع۔ تفصیلات کے مطابق ایک نجی ٹی وی چینل کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ اگلے ماہ کی پہلی تاریخ یعنی یکم جون سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کیے جانے کا امکان ہے۔رپورٹ کے مطابق ملک میں جاری ڈالر کی اونچی اڑان اور عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمتوں میں اضافے کے باعث پاکستان میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرنا

ناگزیر ہو چکا ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ساڑھے 9 روپے فی لیٹر تک اضافہ کیے جانے کا امکان ہے۔ اضافے کی صورت میں پیٹرول کی فی لیٹر نئی قیمت 118 روپے ہو جائے گی۔جبکہ لائٹ اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 7 روپے 85 پیسے فی لیٹر تک اضافے کا امکان ہے۔ جبکہ مٹی کے تیل کی فی لیٹر قیمت میں 12 روپے تک اضافے کا امکان ہے۔ اس حوالے سے اوگرا کی جانب سے سمری تیار کر لی گئی ہے۔ اوگرا پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری 30 مئی کو وزارت خزانہ کو ارسال کرے گا۔ وزارت خزانہ سمری موصول ہونے کے بعد وزیراعظم سے مشاورت کرے گی۔وزیراعظم عمران خان کی منظوری کے بعد ہی قیمتوں میں اضافہ کرنے یا نہ کرنے کا حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ پاکستان میں چند ہی روز کے دوران ڈالر کی قیمت میں کئی روپے کا اضافہ ہوا ہے۔ پاکستان کی کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت 152 روپے تک پہنچ چکی ہے۔ ڈالر کی قیمت میں اضافے کے باعث بیرون ممالک سے منگوائی جانے والی اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے اور مزید اضافہ بھی متوقع ہے۔وفاقی حکومت اپنے پاس موجود ڈالرز کے ذخائر کا بڑا حصہ پیٹرولیم مصنوعات کی خریداری پر صرف کرتی ہے۔ اب چونکہ ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہو چکا ہے، اس لیے حکومت کے پاس بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرنے کے علاوہ دوسرا کوئی آپشن موجود نہیں۔ تاہم پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مزید اضافے سے ملک میں جاری مہنگائی کا طوفان مزید شدت اختیار کر جائے گا۔