آزادکشمیر پاور ڈویلپمنٹ آگنائزیشن میں من پسند امیدواران کو مستقل تعینات کرنے کی تیاریاں مکمل

اسلام آباد(پی کے نیوز) مٹ جائے گی مخلوق تو انصاف کرو گے،منصف ہوتو اب حشر اٹھا کیوں نہیں دیتے، محکمہ لوکل گورنمنٹ بورڈ کی آسامیوں کے بعد آزاد جموں کشمیر پاور ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن میں سول ،الیکٹریکل کی آسامیوں پر بھی مبینہ چہیتوں کو مستقل بنیادوں پر ایڈجسٹ کرنے کی تیاری مکمل۔خبرگرم ہونے پر انٹرویو موخر کوادیا گیا،سابق سیکرٹری مشتاق گورسی کے بھتیجے اور اعلی ترین عدالتی شخصیت بیٹےکو لسٹ میں نمبر ون پر رکھنے سمیت دونوں چہیتوں۔کو۔ایڈجسٹ کیے جانے کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں،ذرائع سے معلوم ہوا کے ٹیسٹ لینے والے عملے نے مبینہ طور پت ان دو افراد سے الگ پرچہ لیا اور ٹیسٹ کے دوران حل کرنے میں مدد بھی کی،اس وقت پی ڈی او کا محکمہ چوہدری رخسار کے پاس ہے جو میٹرک جعلی سند کی بنیاد پر نااہل ہوئے،ان کی نااہلی کیس میرپور سے مخالف امیدوار چوہدری ارشد نے سپریم کورٹ دائر کررکھا ہے،اس صورت حال میں

لوکل گورنمنٹ بورڈ کی طرح پی ڈی او سے بھی اہل امیدواران کا اعتماد اٹھ گیا،واضح رہےآزادکشمیر میں پبلک سروس کمیشن کے بجائے محکمانہ ٹیسٹ سفارشی بنیادوں پر ایڈہاک بھرتی امیدواران کو مستقل کیا جارہا ہے،ایک رپورٹ کے مطابق چھ ہزار ملازمین ایڈہاک تعینات کیے گئے ہیں،جن کو مستقل کرنے کے لیے وزیروں کا وزیر اعظم پر دبائو بھی ہے،دوسری جانب لوکل گورنمنٹ بورڈ کی آسامیوں پر خردبرد کے بعد پی ڈی او کی آسامیوں کے امیدواران میں شدید تشویش کی لہر پائی جاتی ہے،امیدواران نے چیف سیکرٹری آزادکشمیر سے بدوں پی ایس سی تمام تقرریاں منسوخ کرکے پبلک سروس کمیشن کے ذریعے کیے جانے کا مطالبہ بھی کیا ہے۔امیدواران کا کہنا ایڈہاک ازم کے خاتمے کے لیے چیف سیکرٹری ڈویژنل سطح پر دفاتر قائم کرکے ریٹائرڈ لوگوں کے بجائے امتحان پاس کرکے پی ایس سی میں کلیدی عہدوں پر تعیناتی کاحکم دیں تاکہ پڑھے لکھے قابل لوگوں کو موقع مل سکے۔