بجٹ کے بعد وزیراعظم کے خطاب نے کام کردکھایا، پاکستان پر اربوں کی بارش کردی گئی، شاندارتفصیلات

کراچی (نیوز ڈیسک) گذشتہ روز پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے مالی سال 20-2019ء کا بجٹ پیش کیا۔جس کے بعد وزیراعظم عمران خان نے رات گئے قوم سے خطاب بھی کیا۔ پاکستان میں بجٹ پیش کیے جانے اور وزیراعظم عمران خان کے قوم سے خطاب کے بعد اسٹاک ایکسچینج میں تیزی دکھائی دے رہی ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ کاروبار کے دوران 100 انڈیکس میں 431 پوائنٹس کا اضافہ ہوا ہے۔100 انڈیکس 35 ہزار ہزار 91 کی سطح بھی عبور کر گیا۔گذشتہ روز جب قومی بجٹ پیش کیا گیا تو اس دوران پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں کاروبار کا منفی آغاز ہوا۔کاروبار کے دوران 100 انڈیکس 226 پوائنٹس کی کمی دیکھنے میں آئی۔انڈیکس 34 ہزار 341 کی سطح سے بھی نیچے آ گیا۔قومی بجٹ پیش کیے جانے سے ایک دن قبل پاکستان سٹاک ایکسچینج کا اختتام 937 پوائنٹس کی کمی پر ہوا۔خیال رہےو زیراعظم عمران خان

نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ بجٹ نئے پاکستان کی عکاسی کرے گا اور پاکستان عظیم ملک بنے گا۔ انہوں نے کہا کہ لوگ کہتے ہیں مدینہ 14سو سال پہلے بنی تھی اب کوئی نئی بات کرو، میں کہتا ہوں کہ وہ ماڈرن ریاست تھی۔ اصل ریاست وہ ہے جس ریاست کا سربراہ جوابدہ ہو، جہاں کوئی قانون سے اوپر نہ ہو۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ یہ نظریہ پاکستان کی عکاسی کرنے والا بجٹ ہے، مدینہ کی ریاست کے اصول مغربی دنیا میں ہیں لیکن ہم انہیں نہیں اپنا سکے۔عمران خان نے سابق صدر آصف علی زرداری کی جانب اشارہ کر کے کہا کہ کوئی کہتا تھا کہ نیب اسے نہیں پکڑ سکتا اور یہ کہ نیب کون ہوتا ہے لیکن اللہ کا شکر ہے کہ آج بڑے بڑے برج الٹ گئے، وزیراعظم نے کہا کہ مدینہ کی ریاست پہلے دن بڑی ریاست نہیں بن گئی تھی، عمران خان نے کوئی سوئچ نہیں چلانا کہ سب ٹھیک ہو جائے، ان کاموں میں وقت لگے گا۔