ورلڈ کپ میں پاک بھارت ٹاکرا، شاہین آفریدی اور آصف علی آوٹ،کن کھلاڑیوں کو ٹیم میں شامل کیا جائے گا، بڑی تبدیلیوں کا فیصلہ

مانچسٹر(نیوز ڈیسک) پاک بھارت اہم ٹاکرے کے لیے قومی ٹیم بڑی تبدیلیوں کا فیصلہ کرلیا گیا ہے ۔ ورلڈکپ کی اولین مہم میں پاکستانی بیٹنگ بری طرح فلاپ ہوئی اور ویسٹ انڈیز نے باآسانی 7وکٹ سے کامیابی حاصل کی، دوسرے میچ میں گرین شرٹس نے انگلینڈ کےخلاف عمدہ بیٹنگ کے بعد بولنگ میں بھی بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 14رنز سے فتح پائی، سری لنکا کو ہرانے کا موقع بارش کی وجہ سے ضائع ہونے کے بعد ایک پوائنٹ پر اکتفا کرنا پڑا۔بدھ کو آسٹریلیا کیخلاف میچ میں پاکستانی بولرز ابتدا میں وکٹیں لے پائے نہ رنز روک سکے، فیلڈرز نے کیچز بھی چھوڑے، محمد عامر اور وہاب ریاض نے آخر میں عمدہ بولنگ سے کینگروز کو 307تک محدود کیا تو چند بیٹسمین

اچھے آغاز کو بڑے سکور میں بدلنے میں ناکام رہے،شعیب ملک اور آصف علی بھی غیر ذمہ دارانہ سٹروکس کھیل کے ٹیم کی کشتی بیچ منجدھار چھوڑ گئے، وہاب ریاض اور حسن علی نے خلاف توقع کینگروز کی دھلائی کرتے ہوئے فتح کی امید دلائی لیکن مشن مکمل نہ کرپائے۔اب پاکستان کا اگلا معرکہ بھارت کے ساتھ مانچسٹر کے اولڈ ٹریفورڈ سٹیڈیم میں اتوار کو ہوگا، بھارتی ٹیم نے جنوبی افریقہ کو 6وکٹ سے مات دینے کے بعد آسٹریلیا کو 36 رنز سے شکست دی، جمعرات کو بھارت اور نیوزی لینڈ کا مقابلہ بارش کی وجہ سے منسوخ ہوگیا، دونوں ٹیموں کو 1،1 پوائنٹ ملا، بھارتی ٹیم 5پوائنٹس کیساتھ تیسرے نمبر پر ہے، ایک میچ بارش کی نذر ہونے جبکہ 2میں ناکامی کے بعد پاکستان 3پوائنٹس کیساتھ آٹھویں پوزیشن پر اور سیمی فائنل تک رسائی کا سفر دشوار ہوتا جارہا ہے۔بھارت کیخلاف میچ میں فتح گرین شرٹس کی امیدوں کے چراغ روشن کرسکتی ہے جس کے لیے ٹیم مینجمنٹ نے اہم تبدیلیوں کا فیصلہ کیا ہے ، ذرائع کے مطابق فاسٹ باؤلر شاہین شاہ آفریدی اور جارح مزاج بلے باز آصف علی کی جگہ قومی ٹیم میں مڈل آرڈر بلے باز حارث سہیل اور لیگ سپنر شاداب خان کو شامل کیے جانیکا امکان ہے ۔اس بار ورلڈکپ کے اس ہائی وولٹیج مقابلے کو دیکھنے کے خواہشمند لاکھوں شائقین میں سے چند ہزار خوش نصیب ہی ٹکٹ حاصل کرپائے، اتوار کو دنیا بھر سے شائقین کی مانچسٹر آمد متوقع ہے، بلیک میں ٹکٹ 4 گنا قیمت پر فروخت ہو رہے ہیں مگر ٹیموں کو ایکشن میں دیکھنے کے خواہشمند بڑی خوشدلی سے جیب پر اضافی بوجھ برداشت کرنے کو تیار اور موسم کی مداخلت نہ ہونے کی دعا بھی کررہے ہیں ۔