بیرسٹر سلطان محمود چوہدری پی ٹی آئی آزاد کشمیر کی صدار ت کے لیے ناگزیر کیوں ۔۔۔ تحریر: وقار الزمان کیانی

آزاد کشمیر میں پاکستان تحریک انصاف کا وجود سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی کارکردگی نا قابل فراموش ہے بیرسٹر سلطان محمود چوہدری تحریک آزادی کشمیر کے حوالے سے خدمات کے ثمرات میں واحد کشمیری لیڈر ہیں جن کا پوری دنیا میں بغیر کسی عہدئے کے شاندار استقبال کیا جاتا ہے ان کی کاوشوں سے برطانیہ سمیت دیگر یورپی مملک میں تحریک آزادی کشمیر کو اہمیت حاصل ہوئی یورپی پارلمینٹ ہو یا ملین مارچ آپ نے ہر جگہ اپنا لوہا منوایا آپ کی بہترین اور تجربہ کار ٹیم جن میں انتہائی اہم کردار سابق مشیر حکومت سردار امیتا ز خان، سابق وزراٗ، ہر یونین کونسل سے لے پوری دنیا میں جان نثار ساتھی

موجود ہیں۔ سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کے دست راست سابق مشیر حکومت و سابق مرکزی سیکرٹری اطلاعات سردار امیتاز خان عوامی روابط اور اعلیٰ سیاسی جوڑتوڑ اور میڈیامینجمنٹ پر مکمل عبور رکھتے ہیں انتہائی ملنسار اور بااخلاق کردار کی وجہ سے پورئے آزادکشمیرکے عوام سردارامتیاز خان سے خاص طور پر دلی لگاواور نے انتہا محبت کرتے ہیں دور اقتدار میں اپ نے بے شمار فلاحی اور سماجی خدمات سرانجام دی سردارامتیاز خان زمانہ طالب علمی سے ہی سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑئے ہیں جس کے لیے انہیں بہت سی قربانیاں بھی دینا پڑی مگر آزاد کشمیرکی سیاسی لیڈر شپ کے عزت و وقار کے لیے اپنی تمام تر صلاحتیوں کو بروئے کار لا رہے ہیں۔عام طور پر یہ تاثر دیا جاتا ہے کہ پاکستان میں جس کی حکومت ہو آزاد کشمیر میں بھی وہی حکومت ہو گی مگر ایسا ہرگز نہیں ہے، کشمیری عوام باشعور ہیں اور اپنی لیڈر شپ پہ یقین رکھتے ہیں، جس کی ایک مثال ایم کیو ایم کو سبق حاصل ہو چکا ہے ایم کیو ایم جب اقتدار میں تھی اور آزاد کشمیر کے ہر حلقہ میں اپنا امیدوار اس خوش فہمی میں کھڑا کیا کے کراچی میں ہماری نہ ختم ہونے والے اقتدار کو کشمیر عوام اپنے گلے لگا لیں گے مگر ایسا ممکن نہ ہو سکا اور ایک بھی سیٹ نا حاصل کر سکے اس کی دوسری مثال پاکستان میں حکومت ہونے کی وجہ سے سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے اپنے قصیدا گو سابق صحافی مشتاق مہناس کو آزاد کشمیر کو وزیراعظم بنانے کی سرتوڑ کوشش کی مگر جب اپنی کشتی آزاد کشمیر میں ڈوبتی نظر آئی تو مجبوراسیاسی لیڈر راجہ فاروق حیدر کو وزیرعظم آزاد کشمیر نامزد کیا۔، لہذا س

طرح کی کوئی بھی پریکٹس پراشوٹ لیڈر تحریک انصاف کو بڑی ازمائش میں ڈال سکتی ہے۔ سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی پی ٹی آئی میں شمولیت سے قبل آزاد کشمیر میں اس جماعت کو فیس بک کے چند آئی ڈیز اتک محدود تھی جب بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کو وزیر اعظم پاکستان، چیرمین تحریک انصاف عمران خان نے بے داغ سیاسی کیریر ہونے کی وجہ سے صدر بنایا وزراء ، اور بے شمار تگڑئے امیدوار جوق در جوق پی ٹی ائی میں شامل ہوئے راولپنڈی اسلام اباد سمیت دیگر مہاجرین حلقوں پاکستان میں موجودہ الیکشن میں آپ کی سرپرستی میں پاکستان تحریک انصاف کے امیدواروں کو کامیابی حاصل

ہوئی، بیرسٹر سلطان محمود چوہدری واحد کشمیری جو غیر متنازعہ، قبلائی اور علاقائی تعصبات سے بالاتر سوچ کی وجہ سے تمام حلقوں میں اپنا منفرد مقام رکھتے ہیں واحد کشمیری لیڈر ہیں جو بین الاقوامی معاملات اور سفارت کاری پہ مکمل عبور حاصل ہے آپ کی تحریک آزادی کشمیر کی جدوجہد کے ثمرات میں بین الاقوامی سیاسی قیادت بیس کمیپ کے حوالے سے آپ سے مشاورت کرتی ہے۔ پاکستا ن کی طرز کا آزادکشمیر کے عوام تبدیلی اور خوشحالی کا خواب دیکھ رہے ہیں واضح رہے کہ آزادکشمیر میں اس وقت رشوت کے قانون کا راج ہے کرپشن یہاں کے حکمرانوں کا وطیرا ہ ہے عام آدمی کی زندگی انتہائی کٹھن سے کٹھن ہوتی

جا رہی ہے، پاکستان کی طرح آزادکشمیرے کے عوام کی بھی نظریں عمران خان اور قائد کشمیر برسٹر سلطان محمود چوہدری پر جمی ہیں پاکستان تحریک انصاف آزاد کشمیر کی ایک بڑی جماعت بن چکی ہے جسے میں بے شمارنوجوان بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی قیادت میں ایک خوشحال کشمیر کے خوب دیکھ رہے ہیں ان کی قیادت میں پی ٹی آئی نے چھ سال کے عرصہ میں شاندار مقبولیت حاصل کی برسٹر سلطان نے عمران خان کا پیغام گھر گھر پہچایا آزاد کشمیر کے عوام پر امید ہیں کے آزاد کشمیر میں پاکستان تحریک انصاف کی صدارت اور وزیراعظم کا سہرار صر ف اور صر ف سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کے سر پہ ہی سجھنے والا ہے۔(وقار الزمان کیانی ڈپٹی ایڈیٹر جموں و کشمیر دمام سعودی عرب ہیں ان کا ای میل ایڈریس یہ ہےEmail: Journalist.kiani@gmail.com )