بھارت سے مذاکرات کا اب سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، اگر حملہ ہوا تو پاکستان کا جواب کیا ہوگا، عمران خان نے دوٹوک پیغام دیدیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) وزیراعظم پاکستان عمران خان کا کہنا ہے کہ پاک بھارت مذاکرات کے امکانات ختم ہو گئے ہیں۔ بھارت سے مذاکرات کی بہت کوشش کی، بھارت نے پاکستان کی امن مذاکرات کی پیشکش کو کمزوری سمجھا لیکن اب سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ امریکی اخبار کو دئے گئے انٹرویو میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اگرحملہ ہوا تو پاکستان بھارت کو بھرپورجواب دینے پرمجبور ہوگا، 2 جوہری قوتوں کے درمیان جنگ ہوتی ہے تو کچھ بھی ہوسکتا ہے۔وزیراعظم عمران خان نے انٹرویو میں کہا کہ مقبوضہ کشمیرمیں 80 لاکھ افراد کی زندگی داؤ پرلگی ہوئی ہے، ۔خدشہ ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں کی نسل کشی

ہونےوالی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے بارہا بھارت کو مذاکرات کی پیشکش کی لیکن بدقسمتی سے بھارت نے میری باتوں کو مودی سرکار نے محض اطمینان کے لیے لیا۔مقبوضہ کشمیرمیں مسلم اکثریتی علاقوں میں ہندوؤں کو آباد کرنے کی سازش کی جارہی ہے۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمیں خدشہ ہے بھارت، پاکستان کے خلاف جنگ کے بہانے ڈھونڈے گا، اگرحملہ ہوا تو پاکستان بھارت کو بھرپورجواب دینے پرمجبور ہوگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ 2 جوہری قوتوں کے درمیان جنگ ہوتی ہے تو کچھ بھی ہوسکتا ہے، اس وقت جونازک صورت حال ہے وہ دنیا کے لیے خطرہ ہے۔ اور دنیا کو اس حوالے سے خبردار رہنا چاہئیے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو بھی صورتحال سے آگاہ کر دیا ہے۔ یاد رہے کہ یاد رہے دو روز قبل وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان کشمیر کے مسئلے پر ٹیلی فونک رابطہ ہوا تھا جس میں وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مسئلہ کشمیر پر بات چیت کی تھی۔