ایک طرف کشمیریوں کیساتھ اظہار یکجہتی کیلئے ریلیاں تو دوسری جانب یونیورسٹی میں بھارتی گانوں پر رقص، طلباوطالبات کی ویڈیو سامنے آگئی

ملتان (نیوز ڈیسک) ملک بھر میں گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف کشمیریوں سے اظہارِ یکجہتی کے لیے ریلیاں نکالی گئیں جبکہ اس سے قبل بھی پاکستان سمیت دنیا بھر میں کشمیریوں کے حق میں اور بھارت کے خلاف ریلیاں نکالی جا رہی ہیں لیکن دوسری جانب ملتان کے نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے طلباوطالبات بھارتی گانوں پر رقص کرتے رہے۔ملک میں ایک طرف یکجہتی کشمیر کے لئے ریلیاں نکالی جارہی ہیں تو دوسری جانب نشتر میڈیکل یونیورسٹی میں سالانہ اسٹوڈنٹ ویک میں طلبا اور طالبات بهارتی فلمی گانوں پر رقص کرتے رہے۔ سالانہ ہفتہ طلبا میں گزشتہ شب طلبا اور طالبات کے مابین گانوں اور رقص کے مقابلے کروائے گئے۔ بیشتر میڈیکل طلبا اور طالبات نے بهارتی فلمی گانے گائے اور ان پر رقص کیا۔ذرائع کے ماطابق رات گئے تک چلنے والے اسٹوڈنٹ ویک کے دوران انتظامی افسران بهی موجود رہے اور ان کی

سرپرستی میں سب کچھ جاری رہا۔ خیال رہے کہ وفاقی حکومت کی ہدایت پرپنجاب کے تمام سینما گھروں میں زیر نمائش بھارتی فلموں پر پابندی عائد ہے جبکہ تقاریب میں بھی بھارتی گانے چلانے پر پابندی لگائی گئی ہے, وفاقی حکومت کی ہدایت کے بعد صوبائی حکومت نے پنجاب کے تمام سینما گھروں میں زیر نمائش بھارتی فلموں پر فی الفور پابندی عائد کی تھی, صوبائی وزیر اطلاعات و ثقافت فیاض الحسن چوہان نے اپنے ویڈیو بیان میں کہاتھا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے بھارتی فلموں پر پابندی کے بعد صوبہ بھر میں تمام سینما مالکان کو اس حوالے سے سختی سے آگاہ کر دیا گیا ہے او سینما ئوںمیں بھارتی فلموکی نمائش پر فی الفور پابندی عائد کر دی گئی ہے ۔لیکن ملتان میں نشتر میڈیکل یونیورسٹی انتظامیہ نے اخلاقی اقدار کا جنازہ نکال دیا اور سٹوڈنٹ ویک میں رات گئے تک بھارتی گانے گائے جاتے رہے اور ان پر رقص بھی ہوتا رہا۔