سیاست چھوڑ کرملک سے باہر چلے جائینگے،لیگی رہنما کی اہلیہ نبیلہ کو واٹس ایپ پرپیغامات

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما رانا ثناءاللہ کی اہلیہ نبیلہ ثناء کو فون پر دھمکیاں ملنے کا انکشاف ہوا ہے۔اس حوالے سے قومی اخبار کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ رانا ثناءاللہ کی اہلیہ نے دعویٰ کیا ہے کہ انہیں خاندان سمیت ملک سے باہر بھجوانے کی پیشکش کی گئی ہے۔واٹس ایپ پر رابطہ کر کے یہ پیغام دیا گیا ہے کہ سیاست چھوڑ دیں اور رانا صاحب کو لے کر چلی جائیں۔نبیلہ ثناء کا کہنا ہے کہ اب اس لیے رابطے کیے جا رہے ہیں کہ یہ جھوٹے ہیں اور ڈر گئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ کال کرنے والے نے کہا ہے کہ میں آپ کا بھائی اور خیر خواہ ہوں۔انہوں نے مزید بتایا کہ کال کرنے والو کہا کہ جو جیل

میں ہے کیا وہ جائے گا؟ہمارا پاسپورٹ منسوخ اور غداری کا دعویٰ کر کے باہر بھیج دیں۔اس پر کال کرنے والے نے غصے میں کہا کہ زیادہد بہادر نہ بنو اب آپ کو پتہ چل جائے گا۔نبیلہ ثناء کا کہنا تھا کہ لوگ کہتے ہیں کہ چیف جسٹس سے اپیل کریں میں صرف اللہ سے اپیل کر رہی ہوں۔میرا داماد بھی رہا ہو گیا ہے اور اس کے خلاف کچھ بھی نہیں ملا۔خیال رہے کہ رانا ثناءاللہ کی اہلیہ اس سے قبل بھی یہ دھمکیاں ملنے کا الزام عائد کر چکی ہیں۔ رانا ثناءاللہ کی گرفتاری کے بعد انہوں نے کہا تھا کہ انہیں فون کر کے ایک آدمی نے کہا کہ جب آپ کو کہا تھا کہ میڈیا پر آکر کوئی بات نہیں کرنی تو آپ نے بیان کیوں دیا۔انہوں نے بتایا کہ انہوں نے بھی اس فون کرنے والے شخص کو اسی لہجے میں جواب دیا۔جب الاہور کی سیشن عدالت نے مسلم لیگ (ن) پنجاب کے صدر رانا ثنااللہ کو جیل میں گھر کا کھانا دینے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا ۔لاہور کی سیشن عدالت میں رانا ثنا اللہ کو جیل میں گھر کا پرہیزی کھانا فراہم کرنے کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ راناثنااللہ دل کے مریض ہیںلہٰذاانہیں گھریلوپرہیزی کھانادیاجائے،جیل کاکھاناراناثنااللہ کیلئے مضرصحت ہے۔دوران سماعت اے این ایف وکیل نے رانا ثنا اللہ کی میڈیکل رپورٹ جمع کرائی۔ بعد ازاں عدالت نے راناثنا اللہ کو گھر کا کھانا فراہم کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا ۔