کربلا میں بس میں بلاسٹ،12زائرین جان کی بازی ہار گئے

کربلا(نیوز ڈیسک)عراق کے شہر کربلا میں بس میں دھماکے سے 12 افراد جاں بحق، جب کہ متعدد زخمی ہوگئے۔عراقی حکام کے مطابق بس میں زائرین بڑی تعداد میں سوار تھے۔ دھماکے بس کے اندر ہوا۔ دہشت گردوں نے دھماکہ خیز مواد سے نشانہ بنایا گیا۔خبر ايجنسی کے مطابق امدادی ٹيموں نے زخميوں کو مقامی اسپتال منتقل کرديا ہے، جب کہ سيکيورٹی فورسز نے دھماکے کی جگہ کو مکمل سيل کرديا۔عینی شاہدین کے مطابق دھماکے کے بعد بس میں آگ لگ گئی۔ دھماکہ اس وقت کیا گیا جب زائرین کی بس شمالی سمت سے شہر میں داخل ہو رہی تھی۔ حکام کے مطابق دھماکے سے کچھ دیر پہلے ایک مسافر بس سے اترا تھا اور اپنے بیگ بس میں ہی چھوڑ گیا تھا۔کسی بھی تنظیم یا

گروپ کی جانب سے تاحال دھماکے کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی ہے۔ دھماکہ کربلا اور الہلا کے درميان آرمي چيک پوسٹ کے قريب ہوا۔ایک عہدیدار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ ہلاک ہونے والے تمام افراد عام شہری ہیں جو بس میں دھماکے اور اس کے بعد لگنے والی آگ کے نتیجے میں جان کی بازی ہار گئے۔ابھی تک کسی نے بھی اس حملے کی ذمے داری قبول نہیں کی جبکہ دھماکے میں ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔2017 میں عراق میں داعش کی شکست کے بعد حالیہ عرصے کے دوران عراق میں ہونے والے دھماکوں میں نمایاں کمی آئی ہے البتہ شدت پسند اب بھی ملک میں سیکیورٹی فورسز کو وقتاً فوقتاً نشانہ بناتے رہتے ہیں۔