امریکہ کا سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات میں فوجیں بھیجنے کا اعلان

واشنگٹن(نیوز ڈیسک)امریکا نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات میں فوجیں بھیجنے کا اعلان کر دیا۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سعودی عرب میں اضافی فوج بھیجنے کی منظوری دیدی۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی وزیر دفاع مارک ایسپر نے پینٹاگون میں ہنگامی نیوز کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ امریکی صدر نے سعودی عرب میں اضافی فوجی بھیجنے کی منظوری دیدی ہے۔انہوں نے کہا کہ اضافی فوجی بھیجنے کا فیصلہ امریکی قومی سلامتی کے اعلیٰ سطحی اجلاس میں کیا گیا۔ امریکی وزیر دفاع کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کے علاوہ امریکی فوجی متحدہ عرب امارات میں بھی تعینات

کیے جائیں گے، انہوں نے بتایا کہ امریکا نے اضافی فوجی بھیجنے کا فیصلہ سعودی عرب کی درخواست پر کیا تاہم فوجیوں کی تعداد اور ہتھیاروں کی نوعیت کا فیصلہ ابھی باقی ہے۔ان فورسز کی مدد سے دونوں ملکوں کے فضائی اور میزائل دفاعی نظام کو بہتر بنائا جائے گا اور امریکا انہیں دفاعی سامان فراہم کرنے میں تیزی لائے گا۔اس موقع پر چیئرمین جوائنٹ چیفس آف اسٹاف جنرل جوزف ڈنفورڈ نے کہا کہ امریکا کی جانب سے کیے گئے اس فیصلے سے سعودی عرب کا فضائی میزائل دفاعی نظام بہتر ہوجائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ خلیج میں فوج کی مناسب تعداد بھیجیں گے جب کہ فوجی ہزاروں کی تعداد میں نہیں ہوں گے۔امریکی فوجی سعودیہ بھیجنے کا فیصلہ آئل تنصیبات پر حملے کے بعد کیا گیا تاہم امریکا ریاض کے سلطان ایئر بیس پر پیٹریاٹ میزائل دفاعی بیٹری نصب کرچکا جب کہ ریاض کے سلطان ایئر بیس پر 600 امریکی فوجی پہلے سے موجود ہیں۔خیال رہے کہ ایک ہفتہ قبل سعودی عرب میں ابقیق اور خریص کی آئل فیلڈر کو نشانہ بناایا گیا تھا۔جس کے باعث دنیا بھر میں تیل کی رسد کو نققصان پہنچا تھا،امریکا نے الزم عائد کیا تھا کہ ان حملوں میں ایران ملوث ہے۔ایران اس الزام کی تردید کی تھی اور اسے حوثیوں باغیوں کی کاروائی قرار دے دیا۔