وزیر اعظم نے بہترین خطاب کیا، لیکن تقریروں کا وقت گزر چکا، اب عمل کا وقت ہے، سردار بشیر

اسلام آباد(پی کےنیوز) سماجی رہنما سردار بشیر نے کہا ہے کہ عمران خان نے جنرل اسمبلی سے بہترین خطاب کیا اور کشمیریوں کی وکالت کی، ان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کے خطاب سے کشمیریوں کے حوصلے بلند ہوئے،وزیر اعظم عمران خان نے کشمیریوں کی حق خود ارادیت کی تحریک کو دنیا کے سامنے رکھا، کشمیر میں ہونے والے مظالم سے دنیا کو آگاہ کیا، ان کا کہنا تھا کہ جنرل اسمبلی کی تقریر کے بعد وقت بہت کم ہے، دنیا ہماری بات پر توجہ نہیں دے رہی، کشمیریوں کی نسل کشی ہورہی ہے، مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کو دو ماہ ہوگئے، عالمی برادری کے کان پر جوں تک نہیں رینگی، ان کا کہنا تھا کہ تقریروں کا وقت گزرچکا، اب عمل کا وقت ہے، وزیراعظم عمران خان آزاد کشمیر کی قیادت کو فیصلے کا اختیار دیں، ہمارے بھائی مقبوضہ کشمیر میں مارے جارہے ہیں،ہم خاموش نہیں بیٹھ

سکتے، ان کا کہنا تھا کہ اگر اب ہندوستان کے ہاتھ نہ روکے گئے تو وہ کشمیر کو ہڑپ کرلے گایاد رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب میں بھارت اور مودی کا مکروہ چہرہ بے نقاب کردیا۔ عمران خان نے اقوام عالم سے اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا دنیا کا انسانیت کے اوپر تجارت کو فوقیت دینا افسوس ناک ہے۔ جنگ مسلط کی گئی تو خون کے آخری قطرے تک لڑیں گے۔وزیر اعظم نے اپنے خطاب میں واضح کیا کہ مقبوضہ کشمیر میں بھارت جو کچھ کررہا ہے اگر وہ اُن کے ساتھ ہوتا تو وہ بھی بندوق اٹھا لیتے، کرفیو اٹھنے کے بعد کشمیر میں بھارت کی جانب سے خون کی ندیاں بہانے کا خدشہ ہے۔ کشمیری یہ سب خاموشی سے برداشت نہیں کریں گے اور باہر نکلیں گے۔ اسلام نہیں بھارتی مظالم کشمیریوں کو انتہا پسندی کی طرف دھکیل رہے ہیں۔