مگ 27طیارے کسی کام کے نہ رہے، ناقابل استعمال قرار دیدیا گیا

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) مِگ 27 طیارے کسی کام کے نہ رہے۔ بھارتی فضائیہ ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو گئی۔تفصیلات کے مطابق قومی اخبار میں شائع ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ بھارتی فضائیہ اس وقت ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہے کیونکہ اس کے تمام مِگ 27 طیارے اور روسی ساختہ مِگ 21 طیاروں کے پانچ میں سے ایک سکوارڈرن کو آئندہ 12ہفتوں میں ناقابل استعمال قرار دے دیا جائے گا،اس اقدام کے نتیجے میں بھارتی فضائیہ کی سرگرم جنگ میں دشمن کو زیر کرنے کی صلاحیت محدود ہو جائے گی۔2019ء کے آخر تک مگ 27 کو مکمل طور پر فضائیہ سے خارج کر دیا جائے گا۔یہ روسی ساختہ طیارہ بھارت نے لائسنس

معاہدے کے تحت بھارت میں تیار کیا تھا۔یہ طیارے بھارت نے 1970 ء کی دہائی میں سوویت یونین سے خریدے تھے۔۔ واضح رہے کہ بھارت کے طیارے گرنے کے واقعات رونما ہوتے رہتے ہیں۔ ابھارتی فضائیہ کے کئی لڑاکا طیارے تربیتی پروازوں کے دوران گر کر تباہ ہو چکے ہیں۔گذشتہ ماہ بھی بھارتی ریاست اُتر پردیش میں طیارہ گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ طیارہ بجلی کی تاروں میں پھنس گیا جس کے باعث حادثہ پیش آیا۔ حادثے میں کسی جانی نقصان کی اطلاع موصول نہیں ہوئی تھی۔ قبل ازیں بجلی کی تاروں میں پھنس کر ہی بھارت کا ایک ہیلی کاپٹر تباہ ہوا تھا۔ ہیلی کاپٹر گر کر تباہ ہونے کا واقعہ بھارتی ریاست اترکھنڈ کے ضلع اترکاشی میں پیش آیا تھا۔اس واقعہ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس فورس (ایس ڈی آر ایف) کی میڈیا انچارج پروین الوک نے بتایا تھا کہ امدادی سامان لے جانے والا یہ ہیلی کاپٹر ہیریٹیج ایوی ایشن کی ملکیت تھا جسے پائلٹ راج پال اُڑا رہے تھے۔ واضح رہے کہ بھارت میں طیارے اور ہیلی کاپٹرز گرنے اور تباہ ہونے کی خبریں اکثر و بیشتر خبروں کی زینت بنی رہتی ہیں۔ جبکہ فروری میں بھی پاک فضائیہ نے ایک بھارتی مگ 21 اور ایس یو 30 جیسا جدید جنگی طیارہ بھی مار گرایا تھا۔