لاہور کے قبرستان میں عجیب وغریب واقعہ، بچوں کی میتیں کفن سمیت قبروں سے باہر نکل آئیں

لاہور (نیوز ڈیسک) لاہور کے ایک قبرستان میں بچوں کی لاشیں کفت سمیت قبروں سے باہر آگئیں۔ اس حوالے سے معلوم ہوا کہ 4 روزکی بچی کو ایک روز پہلے دفنایا گیا اور اگلے دن جب لواحقین فاتحہ خوانی کے لیے پہنچے تو اُس جگہ پر بڑی قبر دیکھ کر حیران رہ گئے۔ لواحقین پولیس کوساتھ لائے تو 3 بچوں کی کفن میں لپٹی ہوئی میتیں قبروں سے باہر پڑی تھیں۔جس کے بعد تفتیش کی گئی تو اہل محلہ نے الزام عائد کیا کہ گورکن پیسے لے کر قبریں تبدیل کر دیتا ہے۔ پولیس حکام نے علاقہ فرید کالونی کے قبرستان کے گورکن کو حراست میں لے لیا جس کے بعد قبروں سے بچوں کی لاشیں باہر نکلنے کے اس عجیب واقعہ کی تفتیش کی جا رہی ہے۔ پولیس حکام نے بتایا کہ اس واقعہ کی تحقیقات کی جارہی ہیں گورکن قبریں تبدیل کرتا تھا یا لاشیں نکال کر بیچتا تھا اس بارے میں ابھی کچھ بھی

کہنا قبل از وقت ہے۔پولیس نے بتایا کہ ہم ملزم سے تفتیش کر رہے ہیں۔ تفتیش کے بعد ہی واقعہ سے متعلق اصل حقائق کا علم ہو سکے گا۔ خیال رہے کہ قبرستانوں میں اس سے قبل بھی ایسے کئی واقعات دیکھنے میں آئے ہیں جہاں سے قبروں سے میتیں غائب ہو جاتی ہیں اور انہیں چوری کر لیا جاتا ہے۔ قبرستان کے ارد گرد رہنے والے شہریوں کا ماننا ہے کہ اس طرح کے واقعات میں قبرستان کے گورکن کا بہت بڑا ہاتھ ہوتا ہے اور کئی مرتبہ تو گورکن پیسے لے کر بھی یہ کام کرتا ہے کہ یا تو کسی کی قبر میں سے میت نکال کر زیادہ پیسے وصول کر کے اُس قبر میں کسی اور کی میت کو دفن کر دیتا ہے یا پھر جادو ٹونے کرنے والوں کی مدد کرنے کے لیے میتیں ان کے سپرد کرتا ہے۔شہریوں نے پولیس سے مطالبہ کیا ہے کہ ایسے واقعات کو نوٹس لے کر ذمہ دار شخص کا تعین کیا جائے ۔