تحریک انصاف کے اہم ترین رہنما نے جمعیت علماء اسلام میں شمولیت کااعلان کردیا

چارسدہ (نیوز ڈیسک) حکومت کو مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ سے قبل بڑا جھٹکا لگ گیا۔پاکستان تحریک انصاف چارسدہ کے اہم خاندان نے جمعیت علمائے اسلام ف میں شمولیت کا اعلان کر دیا۔تفصیلات کے مبابق سابق ضلع ناظم چارسدہ نصیر محمد خان جے یو آئی ایف میں شامل ہو گئے۔نصیر محمد خان سابق وفاقی وزیر نثار محمد خان کے فرزند اور پی ٹی آئی کے رہنما فضل محمد خان کے بھائی ہیں آج انہوں نے پی ٹی آئی میں شمولیت کا اعلان کیا ہے۔جب کہ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سے ٹیلیفون پر بات کرنے کو تیار ہو گئے ہیں۔ق وزیراعظم عمران خان کی زیر

صدارت پاکستان تحریک انصاف کی کور کمیٹی کا اجلاس ہوا ہے جس میں حکومت نے مولانا فضل الرحمن سے مذاکرات کرنے کا فیصلہ کیا گیا لیکن مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ استعفیٰ کے بغیر حکومت سے کوئی بات چیت نہیں ہو گی۔ئے.وزیراعظم نے پرویز خٹک کو ہدایت کی ہے کہ مولانا فضل الرحمن کے قابل عمل مطالبات تسلیم کیے جائیں۔مذاکراتی ٹیم اگر وزیراعظم عمران خان سے بات کرنا چاہیں تو وزیراعظم بات کریں گے۔ وزیراعظم مولانا سے براہ راست بات چیت کرنے کو تیار ہو گئے ہیں۔جس سے ایک بات واضح ہو گئی ہے کہ حکومت مولانا کے آزادی مارچ کے حوالے سے دباؤ کا شکار ہے۔ں جبکہ دوسری جانب حکومت کی جانب سے مولانا کا مارچ اور دھرنا روکنے کے لیے حکمت عملی بنائے جانے کی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں۔حال ہی میں موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق مولانا فضل الرحمان کو آزادی مارچ اور دھرنا منسوخ کرنے کے لیے نہایت اچھا ”سیاسی پیکج” پیش کیا گیا تھا لیکن مولانا فضل الرحمان نے اس پیکج کی پیشکش کو مسترد کرد یا۔ مولانا نے واضح کر دیا ہے کہ اُن کا آزادی مارچ اور دھرنا پُر امن ہو گا کیونکہ وہ ریاستی اداروں سے تعلقات خراب نہیں کرنا چاہتے۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ مولانا فضل الرحمان عمران خان کے علاوہ کسی بھی سیاسی رہنما سے ہاتھ ملانے کو تیار ہیں۔