کشمیریوں نے نہ 27 اکتوبر کے قبضے کو مانا نہ ہی 5 اگست کے فیصلے کو مانیں گے، خولہ خان

اسلام آباد( پی کےنیوز)تحریک انصاف کی رہنما خولہ خان نے کہا ہے کہ 27 اکتوبر اور 5 اگست کشمیر کی تاریخ کا سیاہ ترین دن ہیں، کشمیری گزشتہ 72 سال سے بھارتی ریاستی دہشتگردی کا سامنا کررہے ہیں، بہتر سال پہلے 27 اکتوبر کو بھارت نے عالمی قوانین کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کشمیر میں فوجیں اتاریں، ریاست کے عوام تب سے اس غیر قانونی قبضے کے خلاف برسر پیکار ہیں، اس قبضے کے خلاف جدوجہد میں لاکھوں کشمیری جانوں کی قربانی دے چکے ہیں، ہزاروں خواتین کی عصمت دری کی جاچکی اور ہزاروں نوجوان بینائی سے محروم ہوچکے ہیں، کشمیریوں کو کاروبار اور جائیدادوں سے محروم کیا گیا،اور ہر سطح پر نقصان پہنچانے کی کوشش کی گئی، پھول جیسی وادی کو خون میں نہلایا گیا،

لیکن کشمیری اس قبضے کو ماننے کیلئے تیار نہیں، ان کا کہنا تھا کہ 5 اگست کو کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے بھارت نے کشمیر پر مستقل قبضے کی کوشش کی ہے، کشمیری اس قبضے کو ماننے کیلئے تیار نہیں ہیں، بھارت نے گزشتہ 85 دنوں سے کشمیریوں کو گھروں میں محصور کررکھا ہے، کشمیر میں خوراک اور ادویات کی شدید قلت ہے، کشمیریوں پر ہونے والے ظلم پر انسانی حقوق کی تنظیوں کی خاموشی سوالیہ نشان ہے،ان کا کہنا تھا کہ کشمیر میں بڑا انسانی المیہ جنم لے رہا ہے، بچے بھوک سے بلک رہے ہیں اور بوڑھے افراد ادویات نہ ملنے کی وجہ سے موت کی وادی میں جارہے ہیں،عالمی برادری نے کردار ادا نہ کیا تو انسانی المیہ خطرناک شکل اختیار کرسکتا ہے۔