پاکستان نے بھارت میں زہریلی گیس چھوڑدی ہے، بھارتی سیاستدان کا مضحکہ خیز دعویٰ ہندوستانیوں کیلئے جگ ہنسائی کا سبب بن گیا

اُترپردیش (نیوز ڈیسک)بھارت نے آج تک ملک میں ہونے والے واقعات کا ذمہ دار کسی نہ کسی طرح پاکستان کو ہی ٹھہرایا ہے جس کی وجہ سے بھارتی سیاستدانوں کو کئی مرتبہ پشیمانی کا سامنا بھی کرنا پڑا ہے۔ لیکن اس کے باوجود بھی بھارت میں کچھ ہوا نہیں کہ اُس کا الزام جھٹ سے پاکستان پر عائد کر دیا جاتا ہے ۔ حال ہی میں بھارتی ریاست اُترپردیش کے رہائشی اور حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما ونیت اگروال شاردا نے کہا کہ بھارت کی فضا کو آلودہ کرنے کے لیے پاکستان کی جانب سے زہریلی گیس چھوڑی گئی ہے۔انہوں نے اپنے بیان میں کہاکہ یہ جو زہریلی ہوا آ رہی ہے، زہریلی گیس آئی ہے، ہو سکتا ہے کہ

کسی بغل کے ملک نے چھوڑ دی ہو جو ہمارے سے گھبرایا ہوا ہے۔انہوں نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ مجھے ایسا لگتا ہے کہ پاکستان اور چین بھارت سے خوفزدہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں اس معاملے پر سنجیدگی سے غور کرنا چاہئیے کہ آیا پاکستان نے بھارت کی طرف کوئی زہریلی گیس چھوڑی ہے یا نہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اُسی وقت سے بوکھلاہٹ کا شکار ہے جب سے نریندرا مودی دوبارہ وزیراعظم اور امیت شاہ ہوم منسٹر بنے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جب جب پاکستان نے بھارت کے ساتھ جنگ کی ہے، اسے شکست کا سامنا ہی کرنا پڑا ہے، اور جب سے نریندرا مودی اور امیت شاہ آئے ہیں پاکستان بوکھلاہٹ کا شکار ہو گیا ہے۔ انہوں نے فضا کی آلودگی کے لیے کسانوں اور صنعتوں کو ذمہ دار ٹھہرانے پر دہلی کے وزیراعلیٰ اروند کیجروال کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہاکہ کسان ملک کے لیے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں، فضائی آلودگی کے لیے کسانوں یا صنعتوں کو ذمہ دار نہیں ٹھہرانا چاہئیے۔ونیت اگروال نے مزید کہا کہ نریندر مودی اور امیت شاہ کی حیثیت اس وقت مہابھارت میں کرشنا اور ارجن کی سی ہے۔ جو تمام مسائل کا حل نکالنے کی صلاحیت رکھتے ہیں، یہ کرشنا اور ارجن کا وقت ہے، مودی کرشنا کے طور پر اور امیت شاہ ارجن کے طور پر اس ملک کی حفاظت کریں گے۔