کرتاپور راہداری کھولنا پاکستان کیلئے فائدمند ثابت، سکھ سرمایہ کار نے کرتارپور میں 50کروڑئونڈ زکی سرمایہ کاری کا اعلان کردیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم عمران خان سے سکھ کمیونٹی کی فلاحی تنظیم کے صدر ڈاکٹر مہندر سنگھ کی سربراہی میں وفد نے ملاقات کی ہے۔سکھ کمیونٹی کی فلاحی تنظیم کے صدر کی وزیراعظم عمران خان کے ساتھ ملاقات میں وزیراعظم کے مشیر زلفی بخاری موجود تھے۔ملاقات کے دوران سکھ کمینوٹی کی فلاحی تنظیم کے صدر ڈاکٹر مہندر سنگھ نے کرتاپور راہداری کھولنے کے تاریخی فیصلے پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا۔اس ملاقات کے بعد جاری اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ ڈاکٹر مہندر سنگھ نے ننکانہ صاحب اور کرتاپور رہداری پر ریسٹ ہاوسز اور ترقیاتی منصوبے شروع کرنے میں دلچسپی کا اظہار کیا گیا۔سکھ رہنما نے

یقین دہانی کرایہ کے پہلے مرحلے کے دوران 50کروڑ پاؤنڈ ز کی سرمایہ کاری کی جائے گی۔وزیراعظم عمرانا خان نے انفرا اسٹرکچر منصوبوں میں دلچسپی ظاہر پرنے پر مہند سنگھ کا شکریہ ادا کیا۔جب کہ مہندر سنگھ کی جانب سے 50 کروڑ پاونڈز کی سرمایہ کاری کے اعلان نے کئی سرمایہ کاروں کو راستہ دکھا دیا۔جب کہ دوسری جانب بابا گور و نانک دیو جی کے 550ویں جنم دن کے موقع بھارت سمیت دنیا بھر سے آنے والے سکھ یاتری گورودوارہ دربار صاحب کرتار پور ناروال پہنچ گئے ،کرتار پور راہداری اور گورو دوارہ صاحب میں ہونے والے ترقیاتی کام دیکھ کر سکھ یاتریوں کے پاکستان زندہ باد اور عمران خان زندہ باد کے نعرے ،یاتریوں نے کرتار پور صاحب کو دنیا کا سب سے بڑا او ر خوبصورت ترین گورو دوارہ قرار دے دیا ۔سکھ یاتریوں کو سخت سیکورٹی میں ننکانہ صاحب سے کرتارپور نارووال لے جایا گیا ۔ایڈیشنل سیکرٹری شرائنز طارق وزیر ، ڈپٹی سیکرٹری شرائنز عمران گوندل ،ترجمان متروکہ وقف املاک بورڈ عامر حسین ہاشمی و دیگر افسران انکے ہمراہ تھے ۔یاتریوں نے گورو دارہ صاحب میںحاضری دی اور اپنی مذہبی رسومات ادا کرتے ہوئے ملک پاکستان کی ترقی و خوشحالی اور وزیراعظم عمران خان کی کامیابی و طول عمر کے لیے خصوصی دعائیں کیں ، سکھوں کے مذہبی رہنما بابا پر نندر پال سنگھ گیانی نے کہا کہ ہمیں یہاںکی ترقی و خوبصورتی دیکھ کر ہمیں اپنی آنکھوں پر یقین نہیں آتا،ہم نے تو ایسا کھبی سوچا بھی نہ تھا ، ہم پاکستان کا یہ احسان کھبی نہیں بھلا سکتے ،دنیا میں بسنے والے ہر سکھ کے دل میں گورو دھرتی کی محبت پہلے سے زیادہ بڑھ گئی ہے اور ہر کوئی کرتار پور یاترا کے لیے بے چین ہے ۔