نواز شریف کی ضمانت میں آرمی چیف کے قریبی رشتہ دار کا کردار سامنے آگیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف کا نام ای سی ایل سے چند ہی گھنٹوں میں نکالے جانے امکان ظاہر کیا جا رہا ہے جس کے بعد وہ علاج کے لیے بیرون ملک روانہ ہو جائیں گے۔جب کہ مریم نواز کا بھی بیرون ملک جانے کا دعویٰ کیا جا رہا ہے۔سیاسی صورتحال پر حالیہ پیش رفت پر سیاسی تجزیہ نگاروں کی مختلف رائے دیکھنے میں آ رہی ہے۔اسی حوالے سے سینئرصحافی فخر الرحمان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ نواز شریف کی ضمانت کے لیے کس نے اہم کردار ادا کیا؟۔انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی والدہ اور شہباز شریف نے جنرل قمر جاوید باجوہ کے قریبی رشتہ دار سے ملاقات کی،جس نے کلیدی کھلاڑی کا کردار ادا کیا۔فخر الرحمان نے مزید دعویٰ کیا ہے کہ کلیدی کردار ادا کرنے والی اس شخصیت نے اگست 2019ء میں

نوازشریف سے کوٹ لکھپت جیل میں بھی ملاقات کی تھی۔انہوں نے مزید دعویٰ کیا کہ نواز شریف ،ان کی والدہ، شہباز شریف اور مریم نواز بھی لندن میں ہوں گے۔کیسز زیر التو رہیں گے۔نواز شریف واپس نہیں آئیں گے۔خیال رہے کہ حکومت نے اصولی طور پر نواز شریف کی نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست کو منظور کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے اور شریف خاندان کی درخواست پر وزارت داخلہ کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ نوازشریف کا نام ای سی ایل سے نکالنے کے لیے اپنی سفارشات وفاقی کابینہ کو ارسال کرئے. حکومتی ذرائع کے مطابق وزارت داخلہ اگلے24سے48 گھنٹوں کے دوران وفاقی کابینہ کو اپنی سفارشات ارسال کردے گی اور کابینہ کی منظوری کے بعد سابق وزیراعظم کا نام ای سی ایل سے نکال دیا جائے گا اور نوازشریف ممکنہ طور پر اگلے ہفتے لندن روانہ ہوجائیں گے.