والدہ کو تو کھوچکی ہوں لیکن اب والد کو نہیں کھونا چاہتی، مریم نواز

لاہور(نیوز ڈیسک)مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں سیاست میں متحرک ہونے سے متعلق سوال کے جواب میں کہا کہ سیاست پوری زندگی چلتی رہے گی لیکن والدین دوبارہ نہیں ملتے۔ میں ایک سال پہلے اپنی ماں کو کھو چکی ہوں۔ اس وقت میری پوری توجہ میاں صاحب پر ہے ۔ میں اُن کو ملازم یا نرسز پر نہیں چھوڑتی میں چوبیس گھنٹے اُن کے پاس ہوتی ہوں۔انہوں نے کہا کہ میں بڑی مشکل سے عدالت میں پیش ہوئی ہوں۔ کیونکہ میاں صاحب کے سارے معاملات میں خود دیکھتی ہوں، مجھے اس وقت صرف اور صرف اُن کی زندگی اور صحت کی فکر ہے کیونکہ والدین دوبارہ نہیں ملتے۔ مریم نواز نے کہا کہ ڈیل کی باتیں کرنے والوں کو شرم آنی چاہئیے۔ باہر جانے کے حوالے سے سروسز اسپتال کے ڈاکٹرز اور

میڈیکل بورڈ تجویز پیش کر چکا ہے۔مریم نواز نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف کا علاج دنیا میں جہاں سے ممکن ہے وہاں جانا چاہیے، میاں صاحب علاج کے لیے رضامند ہوئے یا نہیں یہ علیحدہ بحث ہے۔ انہوں نے کہا کہ میاں نواز شریف کی طبیعت بہت زیادہ خراب ہے۔خیال رہے کہ احتساب عدالت میں آج چودھری شوگر ملز کیس کی سماعت ہوئی جہاں مریم نواز عدالت میں پیش ہوئیں۔جب کہ نوازشریف کی جانب سے طبی بنیادوں پر حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دی گئی جسے منظور کر لیا گیا۔ دوران سماعت لیگی نائب صدر مریم نواز سے شورٹی بانڈ پر دستخط کروائے گئے جس کے بعد عدالت نے کیس کی مزید سماعت 22 نومبر تک ملتوی کر دی اور آئںدہ سماعت پر مریم نواز اور نواز شریف کو بھی پیش ہونے کا حکم دیا۔