وزیراعظم کے قریبی دوست انیل مسرت کیساتھ منموہن سنگھ کے گارڈ نے کیا سلوک کیا، ویڈیو وائرل

کرتاپور (نیوز ڈیسک)بھارت کے سابق وزیراعظم منموہن سنگھ کرتارپور راہداری کی افتتاحی تقریب میں حکومت پاکستان کی دعوت پر شریک ہوئے ، اس دوران ان کی وزیراعظم عمران خان سمیت اہم شخصیات سے رسمی ملاقات بھی ہوئی ۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کے دوست سمجھے جانیوالے انیل مسرت نے سابق بھارتی وزیراعظم کیساتھ سیلفی لینے کی کوشش کی تو سیکیورٹی اہلکار انیل مسرت اور منموہن سنگھ کے درمیان آگئے اور انیل مسرت کو ایک طرف دھکیل دیا جس کی اب ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے۔سینئر صحافی سلیم نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انیل مسرت کا گھر بھارتی شخصیات کے ساتھ تصویروں سے بھرا پڑا ہے۔ ان کے ہاں برطانیہ میں پاکستانیوں سے زیادہ انڈین نظر آتے ہیں لیکن پھر بھی وہ بھارتیوں کے ساتھ سلفیوں سے سیر نہیں ہوئے۔اب یہ شخص ہر وقت ہمارے وزیراعظم کے دائیں بائیں ہی

رہتے ہیں۔ اللہ اس ملک کا محافظ ہو۔ایک صارف نے ٹویٹ کیا کہ وزیراعظم پاکستان کے قریبی دوست انیل مسرت نے سابق بھارتی وزیراعظم کے ساتھ سیلفی بنانا چاہی من موہن سنگھ کے گارڈز نے پیچھے دھکیل دیا۔ایک اور صارف نے انیل مسرت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ کہتے ہیں کہ انیل مسرت جس سے ملتا ہے اس کیساتھ تصویر ضرور بناتا ہے۔۔مگر اسکو من موہن سنگھ نے اوقات دکھا دی۔ایک صارف نے کہا کہ یہ اوقات ہے انیل مسرت کی کہ بھارت کا سابق وزیر اعظم اس کے ساتھ تصویر نہیں بناتا اور پاکستان کا سلیکٹڈ وزیراعظم ایک غیر ملکی کو کابینہ کی میٹنگز میں بٹھاتا ہے جہاں پاکستان کے اندرونی بیرونی معاملات زیر غور آتے ہیں۔ایک صارف نے کہا کہ عمران خان کے قریبی دوست انیل مسرت کو بھارتی سیکورٹی اہلکاروں نے ذلیل کرکے بھگادیا۔اس کے علاوہ بھی کئی صارفین نے انیل مسرت کی ویڈیو ٹویٹ کرتے ہوئے دلچسپ تبصرے کیے ہیں۔