بابری مسجد کیس کے متنازعے فیصلے پرپاکستان کا باقاعدہ شدید ردعمل

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)حکومت پاکستان نے بابری مسجد کے مقدمے میں بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے کو ناانصافی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی سپریم کورٹ اقلیتوں کا تحفظ کرنے میں ناکام رہی ہے۔دفتر خارجہ نے بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ ایک بار پھر انصاف کے تقاضوں کو برقرار رکھنے میں ناکام رہا، اس فیصلے سے ظاہر ہوتا ہے کہ سپریم کورٹ ہندوستان کی اقلیتوں کے مفادات کا تحفظ کرنے سے قاصر ہے۔دفتر خارجہ نے ہے کہ بھارتی سپریم کورٹ نے واضح کردیا کہ ہندوستان میں اقلیتیں اب محفوظ نہیں، اس فیصلے نے ہندوستان کے نام نہاد سیکولرازم کا پردہ چاک کردیا اور

ہندوستان کے اقلیتوں میں ان کے عقائد اور عبادت گاہوں سے متعلق خوف پیدا کردیا گیا ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے مزید کہا کہ ہندوستان میں انتہا پسندانہ سوچ اور ہندو کی بالادستی کا نظریہ علاقائی امن و استحکام کے لیے خطرہ ہے، ہندوستانی حکومت مسلمانوں کی جانوں، حقوق اور املاک کے تحفظ کو یقینی بنائے اور بھارتی حکومت ہندو انتہا پسندوں کا نشانہ بننے والے مسلمانوں سے متعلق خاموش تماشائی نہ بنے۔ واضح رہے کہ ہفتے کے روز بھارتی سپریم کورٹ نے تاریخی بابری مسجد کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے متنازع زمین رام مندر کی تعمیر کے لیے ہندوؤں کو فراہم کرنے اور مسلمانوں کو مسجد تعمیر کرنے کے لیے متبادل کے طور پر علیحدہ زمین فراہم کرنے کا حکم دیا۔