جعلی اکائونٹس کیس، آصف زرداری بُری طرح پھنس گئے،سابق صدر کے قریبی ساتھی کو گرفتار کرلیا گیا

لاہور (نیوز ڈیسک) نیب راولپنڈی نے کراچی میں سابق سیکرٹری اعجازہارون کو گرفتار کرلیا ،اعجاز ہارون نے اومنی گروپ کو فرضی ناموں پر12 پلاٹ جاری کیے، اعجاز ہارون آصف زرداری کے قریبی ساتھی ہیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق نیب راولپنڈی نے کراچی میں کارروائی کی ہے۔ نیب نے چیئرمین اوورسیز کوآپریٹو سوسائٹی اعجاز ہارون گرفتار کرلیا ہے۔ملزم اعجاز ہارون پر غیرقانونی طور پر پلاٹس الاٹ کرنے کا الزام ہے۔ ملزم اعجاز ہارون نے 12 جعلی پلاٹس بنائے اور جعلی الاٹیوں کو الاٹ کیے۔ بتایا گیا ہے کہ ملزم اعجاز نے 12 جعلی پلاٹوں کی آڑ میں اومنی گروپ 144 ملین روپے بھی لانڈر کیے۔جعلی بینک اکاؤنٹس میں ایم ایس

لکی انٹرنیشنل اور ایم ایس اے ون کے اکاؤنٹس شامل تھے۔ مزید برآں قومی احتساب بیورو نے زمینوں کی غیر قانونی فروخت میں ملوث سرکاری افسران کو اسلام آباد سے کراچی منتقل کردیا، گرفتار ملزمان کا تعلق واٹربورڈ اور کے ڈی اے سے ہے۔تفصیلات کے مطابق زمینوں کی جعل سازی کے مقدمات میں ملوث چار گرفتار سرکاری افسران اسلام آباد سے کراچی منتقل کردیے گئے۔اس حوالے سے نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ گرفتار ملزمان میں واٹربورڈ کے دو اور کے ڈی اے کے دو افسران شامل ہیں، ملزمان کے خلاف ریفرنس درج کرکے مزید تفتیش کا آغاز کیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق ملزمان نے اربوں روپے مالیت کی زمینیں جعل سازی سے الاٹ کیں، گرفتار واٹر بورڈ افسران نے جعلی کاغذات بنا کر زمینیں لینڈ مافیا کو فروخت کیں۔گرفتار ملزمان میں ایکس سی این واٹر بورڈ سید اعجاز اور شاہ یوسف امام شامل ہیں، نیب ذرائع کے مطابق کے ڈی اے افسران میں محمد انور فاروقی اور ایگزیکٹیو انجینیئر عبدالجلیل شامل ہیں۔علاوہ ازیں کراچی کے علاقے فیروزآباد میں پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے دو ملزمان کو گرفتار کرکے اسلحہ اور منشیات برآمد کرلیں۔پولیس کے مطابق ملزمان جرائم کی متعدد وارداتوں میں ملوث ہیں، ملزمان کیخلاف مقدمہ درج کرکے مزید تفتیش کا آغاز کردیا گیا ہے۔