سیاچن میں 2بھارتی فوجی واصل جہنم

سیاچن (نیوز ڈیسک) سیاچن میں برفانی تودہ گرنے سے دو بھارتی سورما ہلاک ہو گئے۔بھارتی میڈیا کے مطابق دونوں بھارتی فوجی گشت پر تھے جب یہ واقعہ پیش آیا۔بتایا گیا ہے کہ برفانی تودہ گرنے کا واقعہ گذشتہ روز پیش آیا۔ بھارتی حکام نے بتایا کہ دونوں فوجی اہلکار معمول کی گشت پر تھے کہ برفانی تودوں کی زد میں آ گئے۔گذشتہ ماہ بھی ساچن میں ایسا ہی واقعہ پیش آیا تھا۔سیاچن میں برفانی تودہ گرنے سے چار بھارتی فوجی اور دو قلی ہلاک ہو گئے تھے۔واضح رہے کہ قراقرم کے پہاڑی سلسلے میں تقریباً 20 ہزار فٹ کی بلندی پر واقع سیاچن کے محاذ کو دنیا کا ایک انوکھا جنگی محاذ تصور کیا جاتا ہے۔ یہاں گذشتہ 35 برس سے پاکستان اور بھارت کی افواج مدِمقابل ہیں اور یہ جنگ پاکستان اور بھارت کے لیے ایسا دلدل بن چکی ہے جس سے نکلنا مستقبل قریب میں دونوں ممالک کے لیے ممکن نظر نہیں آتا۔اس طویل عرصے

میں تقریباً تین سے پانچ ہزار فوجی اور کروڑوں ڈالرز گنوانے کے باوجود دونوں ممالک کے عسکری حکام اس محاذ سے واپسی پر تاحال قائل نہیں ہو سکے ۔ گذشتہ 16 سالوں سے سیاچن پر بندوقیں استعمال نہ ہونے کے باوجود دونوں فریقین اپنے بنیادی موقف پر کسی قسم کی بھی لچک دکھانے سے قاصر ہیں۔ سیاچن گلیشیئر پر درجہ حرارت منفی پچاس ڈگری سینٹی گریڈ تک گر جاتا ہے ۔یہی وجہ ہے کہ یہاں رہنے والے فوجیوں کی اکثریت مخالف فوج کے ساتھ جھڑپوں میں جان سے نہیں گئے بلکہ یہ لوگ برفانی طوفانوں، شدید سردی میں اعضا سن ہو جانے اور انتہائی بلندی پر آکسیجن کی کمی کی وجہ ان کے لیے جان لیوا ثابت ہوئی۔ اکثر فوجیوں کو انتہائی بلندی پر ہونے کی وجہ سے سانس میں تکلیف، سر درد اور بلڈ پریشر کے مسائل شروع ہو جاتے ہیں جس کی وجہ سے فوجیوں کو ہر وقت برفانی لباس (اِگلو) میں ملبوس رہنا پڑتا ہے۔