پاکستان میں طلبہ یونینز کی بحالی، وزیراعظم عمران خان کا ردعمل بھی سامنے آگیا

لاہور(نیوز ڈیسک)وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ بدقسمتی سے پاکستان میں طلباء یونینز پرتشدد ہو گئی ہیں اور پرتشدد طلباء یونینز کیمپس کا تعلیمی ماحول تباہ کرتی ہیں۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر اپنے ٹویٹ میں وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یونیورسٹیاں ملک میں مستقبل کے رہنما تیار کرتی ہیں جب کہ طلباء تنظیمیں مستقبل کے لیڈرز بنانے میں اہم ہوتی ہیں، بدقسمتی سے پاکستان میں طلباء یونینز پرتشدد ہو گئی ہیں اور پرتشدد طلباء یونینز کیمپس کا تعلیمی ماحول تباہ کرتی ہیں۔عمران خان نے کہا کہ ہم بین الاقوامی جامعات میں جاری بہترین مثالوں سے استفادہ کرتے ہوئے ایک جامع اور قابلِ عمل

ضابطہ اخلاق (کوڈ آف کنڈکٹ) متعارف کرائیں گے تاکہ طلبا یونین کی بحالی اور سرگرمی شروع ہو اور وہ ملک کی نوجوان نسل کو سنوارنے اور مستقبل کے رہنماؤں کی فراہم میں اپنا مثبت کردار ادا کر سکے۔ یاد رہے ملک میں طلبہ تنظیموں نے پاکستان بھر کے پچاس شہروں میں مارچ کا اہتمام کیا تھاجہاں طلبہ کے حقوق کیلئے آواز اٹھائی گئی اور یونین کو بحال کرنے کے مطالبے کے ساتھ ساتھ ،بڑھتی ہوئی فیسوں کیخلاف بھی آواز بلند کی۔جس پر زیادہ تر سیاسی رہنما طلبہ تنظمیوں کی بحالی کی مخالفت کرچکے ہیں ،تاہم ،شیخ رشید ،بلاول بھٹو اور فواد چوھدری نے طلبی یونین کی تشکیل کی حمایت کی تھی۔