آڈیٹرجنرل آف پاکستان نے بلین ٹری سونامی کا بھانڈا پھوڑ دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) آڈیٹرجنرل آف پاکستان نے بلین ٹری سونامی کا بھانڈا پھوڑ دیا ہے، 17-2016ء کی رپورٹ میں میں بتایا گیا کہ بلین ٹری سونامی اور محکمہ جنگلا ت میں47 کروڑسے زائد کی بےقاعدگیاں ہوئیں۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق آڈیٹرجنرل آف پاکستان کی رپورٹ نے17-2016ء کی رپورٹ میں بلین ٹری سونامی کی بےقاعدگیوں کی نشاندہی کردی۔بلین ٹری سونامی اور محکمہ جنگلا ت میں47 کروڑ سے زائد کی بےقاعدگیاں ہوئیں۔ چترال میں267 ہیکٹرپرلاکھوں پودوں میں سے صرف چند موجود تھے۔ دوسری جانب ڈویژنل فاریسٹ آفس فیصل آباد کے ترجمان نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کے 10بلین ٹری سونامی پروگرام پر

بھر پور انداز میں عملدر آمد جاری ہے اور اس پروگرام کے تحت مالی سال2023 کے اختتام تک پنجاب بھر میں 466 ملین سے زیادہ پودے لگانے کا ہدف مکمل کیا جائے گا نیز شہریوں کو 2 روپے فی کس کے حساب سے تھیلی دار پودوں کی فراہمی کیلئے صوبہ بھر میں ضلعی و تحصیل سطح پر نرسریوں کا قیام بھی شروع کر دیا گیا ہے تاکہ شہری ملک میں جنگلات کی بہتری کیلئے سستے پودے خرید کر نہ صرف شجر کاری مہم میں اپنا بھر پور حصہ ڈالیں بلکہ ان کی آبیاری بھی یقینی بنا سکیں۔ترجمان نے بتایاکہ یکم جولائی 2019 سے شروع کئے گئے اس 10بلین ٹری سونامی پروگرام کے تحت 30جون 2023ء تک مذکورہ درخت لگانے کا ہدف حاصل کرنے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں، اس منصوبہ کے تحت نہ صرف محکمہ جنگلات کی زمینوں، دیگر سرکاری و نجی اداروں بلکہ پاک فوج کے دائرہ کار میں آنے والے رقبہ اور صوبہ بھر میں زرعی زمینوں پر بھی زیادہ سے زیادہ شجرکاری کی جائے گی۔انہوں نے بتایاکہ ہر تحصیل، ضلع، ڈویژن، صوبہ کی آب و ہوا اور اس کی زمینی حالت کو مد نظر رکھتے ہوئے پنجاب بھر میں ضلع و تحصیل کی سطح پر نرسریاں قائم کی جارہی ہیں جن میں متعلقہ علاقہ کی مناسبت سے پودا جات کا انتخاب کرکے انہیں تیار کیا جارہا ہے تاکہ ان کی بہترین ماحول میں افزائش ممکن ہو سکے۔ انہوں نے بتایاکہ موسم بہار2020 میں 19ملین پودے افواج پاکستان کو فراہم کئے جائیں گے اور 2 روپے کی سپورٹ قیمت پر221 ملین پودے کسانوں کو دیئے جائیں گے۔انہوںنے بتایاکہ جو شہری، کسان یا ادارے اپنے کھیتوں و دیگر اراضی پر پودے لگانا چاہتے ہیں وہ سستے پودوں کے حصول کیلئے متعلقہ ضلع کے ڈویژنل فاریسٹ آفیسر

سے رابطہ کر سکتے ہیں۔ انہوں نے بتایاکہ خوشحال کسان، سرسبز پنجاب پروگرام کے تحت بھی زرعی زمینوں پر درختوں کی تعداد بڑھانے کیلئے پنجاب میں کسانوں کی5ہزار ایکڑ رقبے پر شراکتی بنیادوں پر شجر کاری کی جائے گی اور کسانوں کو 70فیصد سبسڈی کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی۔ انہوںنے مزید بتایاکہ روا ںسال30جون 2020 تک سرگودھا اور ڈیرہ غازی خان ڈویژنز کے تمام اضلاع میں بھی 1250ایکڑ رقبہ پر شجرکار ی کی جائے گی۔