ڈاکٹر یہ دیکھ لو وکیلوں کا لشکر،آج تمہاری خیر نہیں، گھس کر ماریں گے، وکلاء کی ڈاکٹروں کو دھمکیاں

لاہور (نیوز ڈیسک)آج پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں وکلاء نے ظلم کی انتہا کر دی۔افسوس کی بات تو یہ ہے کہ وکلاء کو زرا بھی اس بات کا احساس نہ ہوا کہ اُن کی بے حسی کی وجہ سے کتنی جانیں مشکل میں ہیں۔کئی نوجوان وکلاء کی سوشل میڈیا پر ویڈیوز بھی وائرل ہو رہی ہیں جن میں وہ ڈاکٹرز کو دھمکیاں دے رہے ہیں۔ایک وکیل کا ویڈیو میں کہنا ہے کہ میں اس ویڈیو کے زریعے سے ڈاکٹرزکو وکیلوں کا لشکر دکھانا چاہتا ہوں۔وکیلوں کو یہ سمندر اسپتال کی جانب بڑھ رہا ہے جو ڈاکٹرز کو گھس کر مارے گا۔وکیل ڈاکٹر عرفان کو مخاطب کرتے ہوئے کہتا ہے کہ “ڈاکٹر عرفان تمہاری تو خیر نہیں”۔جب کہ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں گھس کر توڑ پھوڑ اور ڈاکٹروں کو تشدد کا نشانہ بنانے کا نوٹس لیتے ہوئے چیف

سیکرٹری پنجاب اورآئی جی پنجاب سے رپورٹ طلب کرلی۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم کو اجلاس کے دوران واقعے سے متعلق آگاہ کیا گیا جس پر انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے رابطہ کرکے 48 گھنٹوں میں واقعے کی رپورٹ طلب کرلی۔واضح رہے کہ وکلاء کی جانب سے پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے اندر گھس کر توڑ پھوڑ کی گئی اور ڈاکٹروں کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔واقعے کی اطلاع ملنے کے بعد وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان رپورٹ لینے کے لیے موقع پر پہنچے تو مشتعل وکلاء نے انہیں تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔ فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ انہیں اغوا کرنے کی کوشش کی گئی، آج انصاف پسند وکلاء بہت رنجیدہ اور دکھی ہوں گے۔وزیر اطلاعات پنجاب کا کہنا تھا کہ بیچ بچاؤ کرنے آیا تھا لیکن وکلاء کی جانب سے تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔