مظفرآباد یونیورسٹی انتظامیہ نےلسپٹک لگانے پر بھی پابندی عائد کردی، خلاف ورزی پر جرمانہ مقرر

مظفرآباد(پی کے نیوز)مظفرآباد یونیورسٹی میں صنفی امتیاز کی بدترین مثال، جامعہ کشمیر کی انتظامیہ نے یونیورسٹی میں طالبات کے لپسٹک لگانے پر پابندی عائد کردی، کوئی لڑکی لپسٹک لگائے پکڑی گئی تو جرمانہ ادا کرنا پڑے گا یونیورسٹی انتظامیہ نے سرکلر جاری کردیا۔سرکلر کے مطابق یونیورسٹی انتظامیہ نے یونیورسٹی میں طالبات کے لپسٹک کے استعمال پر پابندی عائد کردی ہے اور پابندی پر عملدرآمد کا ٹاسک مسرت کاظمی کا سونپ دیا گیا ہے، سرکلر کے مطابق لپسٹک لگائے پکڑے جانے کی صورت میں طالبات کو ہر بار 100 روپے جرمانہ ادا کرنا پڑے گا۔دوسری جانب سرکلر سامنے آنے کے بعد خواتین میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے اور اسے صنفی امتیاز کی بدترین مثال قرار دیا جا رہا ہے جبکہ سوشل میڈیا پر پر سرکلر کو لیکر لے دے جاری ہے،

خواتین کا کہنا ہے کہ صرف طالبات پر ہر قسم کی پابندی عائد کرنا درست نہیں ہے، یونیورسٹی میں طلبہ کو ہر قسم کی آزادی حاصل ہے ساری پابندی صرف طالبات کے لیے ہی ہیں جبکہ فی میل ٹیچرز بھی بھرپور فیشن کر کے یونیورسٹی آتی ہیں نہ تو یونیورسٹی نے ٹیچرز کے کپڑوں پر کوئی پابندی عائد کی ہے اور نہ ہی لپسٹک پر کوئی پابندی ہے۔ دوسری جانب رجسٹرار آزاد کشمیر یونیورسٹی کا کہنا تھا کہ یہ نوٹیفیکیشن یونیورسٹی کا نہیں بلکہ ایک ڈیپارٹمنٹ کی میڈیم نے اپنے طور پر اپنے ڈیپارٹمنٹ کے لیے جاری کیا ہے، متعلقہ میڈیم کو یہ اختیار نہیں تھا کہ وہ کسی پر اس قسم کی پابندی عائد کریں مجھے بھی جمعے کو یہ سرکلر ملا ہے، سوموار کو کو میڈیم کو اس بابت سمجھا دوں گی کہ وہ یہ نوٹیفکیشن جاری کرنے کا اختیار نہیں رکھتی تھی۔