نامناسب ویڈیو کامعاملہ،بنوں یونیورسٹی کے وائس چانسلر کو دو آپشنز دیدیئے گئے

بنوں(نیوز ڈیسک) بنوں یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے لیے دو آپشنز میں سے ایک کا انتخاب کرنے کی سفارش کر دی گئی۔تفصیلات کے مطابق وائس چانسلر بنوں یونیورسٹی سید عابد علی شاہ کی غیر اخلاقی ویڈیو وائرل ہوگئی تھی۔ویڈیو میں وہ لڑکی کے ساتھ ڈانس کرتے ہوئے دیکھے گئے۔ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ لڑکی نامناسب لباس زیب تن کیے ہوئے ہے جب کہ ڈاکٹر عابد علی شاہ بغیر کسی خوف کے اس کے ساتھ رقص میں مصروف ہیں۔ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد یونیورسٹی کے طلباء اور دیگر سوشل میڈیا صارفین کی جانب سے یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر عابد علی شاہ پر سخت تنقید کی گئی۔یونیورسٹی کے چانسلر اور صوبے کے گورنر شاہ فرمان نے مذکورہ معاملے کو دیکھنے کے لیے ایک تین رکنی ٹیم قائم کی تھی۔زرائع کے مطابق وائس چانسلر نے انکوائری ٹیم کو بتایا کہ یہ ویڈیو

انہی کی ہے لیکن یہ رقص وائس چانسلر بننے سے قبل کیا گیا تھا اور یہ کیمپس کے اندر نہیں تھا۔پروفیسر عابد علی نے یہ بھی الزام عائد کیا کہ ریٹائرڈ سرکاری عہدیدار یونیورسٹی میں ملازمت کے لیے انہیں اس ویڈیو کا استعمال کر کے بلیک میل کرتے رہے۔انکوائری ٹیم نے اپنی تحقیقات میں کہا کہ یہ ویڈیو مغربی سوسائٹی میں تو قابل قبول ہو سکتی ہے لیکن پاکستان میں نہیں۔واقعے کی ویڈیو نے بطور اسٹاف وائس چانسلر کی ساکھ کو بھی نقصان پہنچایا۔تحقیقاتی ٹیم نے یہ بھی کہا کہ گورنر یونیورسٹی کے چانسلر کے طور پر اپنی استطاعت میں وائس چانسلر کو ذاتی طور پر سننے کا موقع دیں گے۔تاہم اب حکومتی تحقیقاتی کمیٹی نے سفارش کی ہے کہ گورنر خیبرپختونخوا بنوں یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر عابد علی شاہ کو نامناسب رقص کی ویڈیور پر استفعیٰ اور برطرفی میں سے ایک انتخاب کرنے کا کہیں۔