فلم ’دی لیجنڈ آف مولاجٹ‘ کے راستے میں حائل تمام رکاوٹیں ختم،فلم کی ریلز جلد متوقع

کراچی(نیوز ڈیسک)فلم ’دی لیجنڈ آف مولا جٹ‘ کے راستے میں حائل تمام رکاوٹیں ختم، تمام کیسز کو واپس لے لیا گیا، فلم کی ریلز جلد متوقع، شائقین کو بے صبری سے انتظار، تفصیلات کے مطابق پاکستانی فلم ’ دی لیجنڈ آف مولا جٹ‘ میں ہوتے تمام کیسز واپس لے لیے گئے ہیں۔ 1979 میں ریلز ہونے والی فلم ’مولا جٹ‘ کے پروڈیوسر سرور بھٹی نے فلم ’دی لیجنڈ آف مولا جٹ‘ کے ہدایت کار بلال لاشاری اور پروڈیوسر عمارہ حکمت پر کاپی رائٹ کا دعویٰ دائر کیا تھا اور کہا تھا کہ انھوں نے فلم بنانے کے لیے ان سے اجازت نہیں لی۔دو سال تک یہ کیس چلتا رہا اور اب عمارہ حکمت کی جانب سے خبر سامنے آئی ہے کہ فلم پر کیے گئے تمام تر کیسز کو واپس لے لیا گیا ہے۔ اس حوالے سے سرور بھٹی کا کہنا ہے کہ انہوں نے تمام تر چیزوں کو پیچھے چھوڑدیا ہے۔عمارہ حکمت اور بلال لاشاری

انکے بچے ہیں، کسی نے انہیں گمراہ کیا تھا، بچے غلطیاں کرتے ہیں ایسی ہی ایک غلطی ان سے ہوئی اس لیے انھیں معاف کر دیا ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ میں نے یہ قدم پاکستان میں سینما کی بحالی اور پاکستان فلم انڈسٹری کے لیے اٹھایا ہے۔ میں اب ’’دی لیجنڈ آف مولاجٹ‘‘ کی ریلیز میں کوئی رکاوٹ پیش نہیں کرونگا، دونوں جب چاہیں فلم کو ریلز کرسکتے ہیں۔ یاد رہے کہ 1979 میں فلم ’مولا جٹ‘ ریلیز ہوئی تھی جس نے کامیابی کے جھنڈے گاڑ دیے تھے۔ اسے پاکستان کی تاریخ کی سب سے کامیاب فلم بھی کہا جاتا ہے۔ اسکی مقبولیت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے بلال لاشاری نے ’دی لینجڈ آف مولا جٹ‘ بنائی تھی۔ جس میں مرکزی کرداراداکارہ ماہرہ خان، فواد خان اور حمزہ علی عباسی نے نبھایا ہے۔ مذکورہ فلم میں فواد خان مولا جٹ جبکہ حمزہ علی عباسی نوری نتھ کے کردار میں جلوہ گرہونگے۔