نہ پیار کریں گی ناپسند کی شادی کرینگی، کالج کی لڑکیوں نے حلف لے لیا

بھارت(نیوز ڈیسک) آج کے جدید دور میں پسند کی شادی کرنا ایک فیشن بن چکا ہے۔نوجوان لڑکے اور لڑکیاں پسند کی شادی کرنے کو ہی ترجیح دیتے ہیں۔بھارت ہو یا پاکستان، دونوں طرف ایسا ہی دیکھنے میں آتا ہے۔ بھارت میں ایک ایسا واقع پیش آیا ہے جس میں بھارت کی مغربی ریاست کے امراوتی ضلعے میں ایک ویمن کالج کی انتظامیہ نے اپنی خاتون طالبات سے حلف لیا ہے کہ وہ کبھی پیار نہیں کریں گی اور نہ پسندکی شادی کریں گی۔بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ روز ویلینٹائن ڈے کے موقع پر ودربا یوتھ ویلیفیئر سوسائٹی کے زیراہتمام ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیا جس میں لڑکیوں سے پسند کی شادی نہ کرنے کا

حلف لیا گیا ہے۔اساتذہ نے طالبات سے مزید مطالبہ کیا ہے کہ وہ کسی ایسے شخص سے شادی نہ کریں جو جہیز کا مطالبہ کرے۔اساتذہ کا کہنا تھا کہ ہمیں ہماری آنے والی نسلوں میں جہیز کے رواج کو ختم کرنا ہے۔تمام طالبا ت نے ایک ساتھ مل کر کہا کہ ہم کبھی پیار نہیں کریں گے، ہمیں ہمارے والدین پر یقین ہیں اور میں کسی ایسے شخص سے شادی نہیں کروں گی جو جہیز کا مطالبہ کرے گا۔ تمام طالبات کا کہنا تھا کہ ہم نے یہ حلف اپنی سماجی ذمہ داری کو ادا کرتے ہوئے لیا ہے۔ کالج انتظامیہ کا کہنا تھا کہ وہ محبت کے مخالف نہیں ہیں، لیکن ہماری بیٹیوں کو صحیح شخص کے انتخاب کا پتہ ہونا چاہیئے۔بھارت میں ایسے واقعات میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے جہاں لڑکیوں کو پیار محبت کا جھانسہ دے کر ان کے ساتھ جنسی تعلقات قائم کئے جاتے ہیں اور بعد میں اس پیار محبت کے رشتے کو وہاں ہی ختم کر دیا جاتا ہے۔ اساتذہ کا کہنا ہے کہ ہم اس چیز کو ختم کرنا چاہتے ہیں، ہم چاہتے ہیں کہ ہماری بیٹیوں میں درست شخص کی پہچان ہو کہ کون اسے محفوظ رکھے گا اور کون اس کے لئے بہتر شخص ثابت ہو گا۔ مزید بات کرتے ہوئے اساتذہ کا کہنا تھا کہ محبت کرنا کوئی جرم نہیں ہے، لیکن اس نو عمری میں محبت کرنا اکثر طالبات کے مستقبل کو تباہ کر دیتا ہے، اس لئے ہم نے ان سے یہ حلف لیا ہے تا کہ معاشر ے میں بڑھتی ہوئی اس گندگی کو روک سکیں۔