نیب کی جانب سے لاہور میں موجود شریف فیملی کے دفاتر پر چھاپہ

لاہور(نیوز ڈیسک) نیب کی جانب سے لاہور میں موجود شریف فیملی کے دفاتر پر چھاپے مارے گئے ہیں۔ رہنما مسلم لیگ ن مریم اورنگزیب نے اس کارروآئی کا اعتراف کرتے ہوئے بتایا ہے کہ لاہور کے علاقہ ماڈل ٹاون میں موجود مکان نمبر55 کے اور91ایف پر چھاپہ مارا گیا ہے جس میں نیب کی جانب سے 6 گاڑیوں پر اہلکار موجود تھے۔ مریم اورنگزیب نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا ہے کہ چھاپے میں نیب حکام نے سارا ریکارڈ اپنے قبضے میں لے لیا ۔واضح رہے کہ نیب نے یہ کارروآئی لاہور میں موجود شریف خاندان کی ملکیتی کمپنیوں کے دفاتر میں مارے ہیں جس کا اعتراف رہنما ن لیگ مریم اورنگزیب نے خود کیا ہے۔ جبکہ

دوسری جانب نیب کی جانب سے ایسی تمام خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ انہوں نے کوئی چھاپہ نہیں مارے۔مریم اورنگزیب نے الزام عائد کیاہے کہ چھاپہ دوپہر ساڑھے12 بجے مارا گیا ہے جس میں دونوں دفاتر میں نیب کی 6 گاڑیاں داخل ہوئی تھیں اور انہوں نے سارا ریکارڈ اپنے قبضے میں لے لیا ۔اس سے پہلے دسمبر میں بھی ایف آئی اے نے مسلم لیگ ن کے سیکریٹریٹ پر چھاپہ مارا تھا، تفصیلات کے مطابق مسلم لیگ ن کے رہنما عطاء تارڑ نے اعتراف کیا تھا کہ ایف آئی اے نے مسلم لیگ ن سیکریٹریٹ پر چھاپہ مارا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ چھاپہ ماڈل ٹاون 180 ایچ پر ماراگیا تھا۔ چھاپے کے دوران اہم ریکارڈ قبضے میں لے لیا گیا تھا ۔ بتایا گیا ہے کہ ایف آئی اے نے چھاپہ ارشد ملک ویڈیو کیس سکینڈل کے سلسلہ میں مارا تھا۔اسی دوران میڈیا کے سامنے مریم اورنگزیب نے دعویٰ کیا ہے کہ نیب حکام نے شریف خاندان کی ملکیتی کمپنیوں کے دفاتر پر چھاپہ مار کر ساراریکارڈ اپنے قبضے میں لے لیا ہے ۔رہنما ن لیگ نے مزید بات کرتے ہوئے بتایا کہ مجموعی طور پر 6 گاڑیاں آئی تھیں۔ دوسری جانب نیب نے ان تمام خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم نے کوئی چھاپہ نہیں مارا، ایسی تمام خبریں بے بنیاد ہیں۔