پی ایس ایل افتتاحی تقریب کے میزبان خود پر ہونیوالی تنقید سے شدید مایوس

کراچی(نیوز ڈیسک) گزشتہ رات پی ایس ایل 2020ء کی رنگا رنگ افتتاحی تقریب کراچی میں منعقد ہوئی۔ پی ایس ایل 2020 کی افتتاحی تقریب میں میزبانی کرنے والا نوجوان سوشل میڈیا پر شدید تنقید و طنز کی زد میں آ گئے۔۔ سوشل میڈیا پر صارفین کی جانب سے احمد گوڈیل کی پرفامنس پر شدید تنقید کی گئی اور کئی میمز بھی بنائے گئے۔صارفین نے کہا کہ اس میزبان کو بلانے سے بہتر تھا کہ کسی کو میزبانی نہ دیتے، احمد گوڈیل نے صرف وقت ہی ضائع کیا ہے۔۔تاہم اس تمام صورتحال پر احمد گوڈیل خاصے مایوس دکھائی دیتے ہیں۔پی ایس ایل کی افتتاحی تقریب کے میزبان احمد گوڈیل کا کہنا ہے کہ میں صرف اپنے فرائض ادا کر

رہا تھا، میں نے کہاں غلطی کی۔؟ انہوں نے کہا کہ مجھ پر تنقید کرتے ہوئے میرے گھر والوں کو بھی تنقید کی زد میں لایا گیا۔میں لوگوں سے درخواست کرتا ہوں کہ میرے گھر والوں اور میری ماں بہن کو تو بخش دیں۔احمد گڈیل مزید بتاتے ہیں کہ میں گزشتہ رات سے اب تک سویا نہیں ہو۔پچھلی دو راتوں سے ہم مسلسل پی ایس ایل کی تقریب کے لیے محنت کر رہے ہیں۔مجھے بتایا جائے کہ تقریب کی میزبانی کے فرائض سرانجام دیتے ہوئے میں نے کہا پر غلطی کی؟ کیا میں نے اسٹیج پر کوئی بدتمیزی کی؟ کیا میں نے اسٹیج پر کسی کو گالی دی؟ اس تمام صورتحال پر میں بہت زیادہ دکھی ہوں یہاں تک کہ میں نے اپنے موبائل فون کو بھی بھی کل سے فلائٹ موڈ پر کر رکھا ہے۔میرا نمبر بھی فیس بک پر لیک کر دیا گیا ہے۔مجھے لوگوں کی طرف سے متعدد فون کالز کی گئی اور واٹس ایپ بھی کیے گئے۔انہوں نے مزید کہا کہ میں ایک ہوسٹ ہوں۔ آپ لوگ مجھ سے کیا توقع کر رہے تھے؟ احمد گوڈیل نے مزید بتایا کہ میں نے بین الاقوامی سطح پر بھی کئی شو ہوسٹ کیے۔میں واحد پاکستانی ہوں جس نے بھارتی سٹارز کے شو کی میزبانی کی۔ دوسری جانب معروف فنکار علی عظمت نے دعویٰ کیا ہے کہ پی ایس ایل (پاکستان سپر لیگ ) کی تقریب سے بہت سے فنکار ناراض ہو کر گئے۔ پی ایس ایل افتتاحی تقریب پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ معلوم نہیں ہے کہ پی سی بی کا قصور ہے یا براڈکاسٹر کا ۔ انہوں نے انکشاف کیا ہے کہ بہت سے فنکار پی ایس ایل کی افتتاحی تقریب سے ناراض ہو کر واپس چلے گئے۔