شہباز شریف گرفتاری سے تو بچ گئے لیکن نیب نے ایک اور بڑا جھٹکا دیدیا، ن لیگ میں کھلبلی مچ گئی

لاہور(نیوز ڈیسک) ہائی کورٹ کی جانب سے عبوری ضمانت منظور ہونے کے بعد نیب نے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو 9 جون کو دوبارہ طلب کرلیا اورتمام مطلوبہ ریکارڈ ساتھ لیکر آنے کی ہدایت کی ہے۔تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو ( نیب ) نے اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کو9جون کوطلب کرلیا اور تمام مطلوبہ ریکارڈ ساتھ لیکر آنے کی ہدایت کردی، شہباز شریف کو پانچویں مرتبہ کوطلب کیا گیا ہے، جس میں وہ صرف ایک مرتبہ نیب میں پیش ہوئے۔شہباز شریف سےاہلخانہ کودیے گئےتحائف کےتفصیلات طلب کی گئی ہیں جبکہ نیب کی جانب سے سوال کیا گیا ہے کہ ماڈل ٹاون 180 ایچ کس حیثیت میں اورکتنےعرصے وزیر اعلی کیمپ آفس رہا ،کیمپ آفس پراٹھنےوالےاخراجات کس

مدمیں ادا کیے گئے۔نیب نے شہباز شریف اور اہلخانہ سےبیرون ممالک سےآنے والے رقوم کی تفصیلات بھی طلب کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہباز شریف تمام بینک اکاونٹس کی تفصیلات اور نصرت شہباز کوقصور کے قریب دی گئی اراضی کی تفصیل فراہم کریں۔خیال رہے نیب شہباز شریف کےخلاف اثاثہ جات اور منی لانڈرنگ کیس کی تحقیقات کر رہا ہے اور عدم تعاون پرنیب شہباز شریف کووارننگ لیٹربھی جاری کر چکاہے جبکہ شہباز شریف نے کورونا خدشات کے باعث پیش ہونے سےمعذرت کی تھی۔یاد رہے لاہور ہائی کورٹ نے نیب کو شہباز شریف کو گرفتار کرنے سے روک دیا تھا اور شہباز شریف کی عبوری ضمانت17 جون منظور کرتے ہوئے 5لاکھ روپےکے مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا۔