مبینہ جعلی ڈگری، ویتنام نے 27پاکستانی پائلٹس کیخلاف بڑاقدم اٹھالیا

ویتنام(نیوز ڈیسک)ویتنام نے مبینہ جعلی ڈگری پر27 پاکستانی پائلٹس کو معطل کردیا۔ تفصیلات کے مطابق ویتنام کی سول ایوی ایشن کے حکام نے مبینہ جعلی لائنسس اسکینڈل سامنے آنے کے بعد متعلقہ وزارت کی ہدایت پر پاکستان سے تعلق رکھنے والے 27 پائلٹس کو معطل کر دیا ہے۔ویتنام کی سول ایوی ایشن (سی اے اے وی) کے ڈائریکٹر ڈنھویٹ تھنگ کا کہنا تھا کہ یہ فیصلہ وزارت ٹرانسپورٹ کی ہدایت پر دو روز قبل کیا گیا تھا جو کہ جمعرات کو نافذ العمل ہوا ہے۔گراؤنڈ کیے جانے والوں میں وہ پائلٹس ہیں جنہیں پاکستان کی جانب سے لائسنس جاری کیے گئے تھے۔ پائلٹس گزشتہ کئی برس سے ویتنام میں کام کر رہے تھے۔

سی اے اے وی کے ایگزیکٹو کے مطابق ہمیں پاکستانی سول ایوی ایشن حکام کی جانب سے جائزہ رپورٹ کا انتظار ہے جس میں طے ہوگا کہ آیا ان پائلٹس نے جعلی لائسنس حاصل کیا تھا یا نہیں۔انہوں نے کہا کہ جن پائلٹس کے پاس مصدقہ لائسنس ہوگا انہیں دوبارہ کام کرنے کی اجازت ہوگی۔ان کے لائسنس اور قابلیت قانونی ثابت ہوئی تو معطلی ختم کر دی جائے گی۔وزیر ٹرانسپورٹ نے پاکستان سے پائلٹس کے لائسنسوں پر نظرثانی کرنے کی درخواست کی ہے۔خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق ویتنام نے مجموعی طور پر 27 پاکستانی پائلٹس کو لائسنس جاری کیے گئے تھے جن میں سے 12 ابھی بھی سروس میں ہیں جبکہ 15 پائلٹس کے کانٹریکٹ کی مدت مکمل ہو چکی ہے اور وہ کورونا وائرس کی وبا کے سبب پہلے ہی گراؤنڈ ہیں۔سروس میں موجود 12 میں سے 11 پائلٹ ویتنام کی بجٹ ایئرلائن ویٹ جیٹ ایوی ایشن کے لیے کام کر رہے تھے جبکہ ایک جیٹ اسٹار پیسیفک کے لیے جو قومی ایئرلائن ویتنام ایئرلائنز کا ہی ایک یونٹ ہے۔سی اے اے وی کے مطابق ویتنامی ایئرلائنز میں پائلٹس کی مجموعی تعداد 1,260 ہے جن میں سے قریب نصف غیر ملکی شہریت کے حامل ہیں۔