حکومت کیلئے نئی مشکل کھڑی ہوگئی، جانتے ہیں کس بڑی سیاسی جماعت نے سڑکوں پر آنے کا اعلان کردیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)مسلم لیگ ن کا حکومت کیخلاف سڑکوں پر آنے کا فیصلہ، مسلم لیگ ن کے اراکین کل پنجاب اسمبلی سے پریس کلب تک احتجاج کریں گے، احتجاج کے ذریعے حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ پاکستان مسلم لیگ ن کی جانب سے حکومت کے خلاف سڑکوں پر احتجاج کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن کی جانب سے حکومت کے خلاف احتجاج کا فیصلہ کیا گیا ہے، یہ فیصلہ رواں سال کے بجٹ منظور ہونے کے پیش نظر کیا گیا ہے۔پاکستان مسلم لیگ ن کے اراکین کل پنجاب اسمبلی سے پریس کلب تک احتجاج کریں گے، احتجاج کے ذریعے

حکومت کو ٹف ٹائم دینے کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے۔ دوسری جانب مسلم لیگ (ن) پنجاب کی سیکرٹری اطلاعات عظمی بخاری نے کہا ہے کہ بجٹ پاس کرانے کے لئے حکومت کو اپنے ہی لوگوں کی منتیں سماجتیں کرنا پڑیں،جس طرحپکڑ پکڑ کر ممبر لائے گئے یہ باعث شرم ہے۔ا پنے بیان میں انہوں نے کہا کہ حکومتی لوگوں کو عوام دشمن بجٹ کی مبارکبادیں دیتے ہوئے شرم آنی ،بجٹ میں عام آدمی کو کونسا ریلیف دیا گیا جس کی قوم کو مبارکبادیں دی جارہی ہیں۔کرایے کے کھلاڑی شاید چینی،ادویات یا پیٹرول کے کامیاب ڈاکے مارنے پر مبارکبادیں دے رہے ہیں۔ مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماؤں نے کہا ہے کہ حکومت نے آخری بجٹ پیش کردیا، اگلا بجٹ یہ نہیں دیں گے، اتحادیوں نے شاید آخری بار ووٹ دیا ہے، بجٹ پاس ہونا ضروری تھا کیونکہ یہ حساب کتاب کا معاملہ ہے، پی ٹی آئی کے صرف22 ارکان موجود تھے، اب مڈٹرم الیکشن کا انعقاد ضروری ہوگیواضح رہے کہ قومی اسمبلی میں مالی سال 21-2020 کے لیے پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کی جانب سے پیش کردہ بجٹ منظور کرلیا گیا ہے۔قومی اسمبلی نے فنانس بل منظور کرلیا ہے۔ایوان میں وزیراعظم عمران خان بھی موجود تھے۔ بل کی منظوری کیلئے حکومت کے 160ارکان جبکہ اپوزیشن کے 119ارکان موجود تھے۔ حکومت کو بل منظور کروانے میں کوئی مشکل پیش نہیں آئی۔